Saturday - 2018 April 21
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 183320
Published : 7/9/2016 7:9

علامہ اقبال اور آزادی نسواں

اگرچہ علامہ اقبال عورتوں کے لئے صحيح تعليم ، ان کي حقيقی آزادی اور ان کي ترقی کے خواہاں ہيں، ليکن آزادی نسواں کے مغربی تصور کو قبول کرنے کے لئے تيار نھيں۔
اگرچہ علامہ اقبال عورتوں کے لئے صحيح تعليم ، ان کي حقيقی آزادی اور ان کي ترقی کے خواہاں ہيں،ليکن آزادي نسواں کے مغربي تصور کو قبول کرنے کے لئے وہ تيار نہيں ہيں اس آزادي سے ان کي نظر ميں عورتوں کي مشکلات آسان نھيں بلکہ اور پيچيدہ ہو جاتی ہیں،اور اس طرح يہ تحريک عورت کو آزاد نھيں بلکہ بے شمار مسائل کا غلام بنا دیتی ہے، ثبوت کے طور پر مغربي معاشرہ کي مثال کو وہ سامنے رکھتے ہیں جس نے عورت کو بے بنياد آزادي دے دي تھي تو اب وہ اس کے لئے درد سر کا باعث بني ہوئي ہے، کہ جس کے باعث عورت اور مرد کے درمیان وہ مقدس رشتہ بھی ٹوٹتا جارہا ہے، وہ اس طرح اظھار خیال کرتے ہیں:
ھزار بار حکيموں نے اس کو سلجھايا!
مگر يہ مسئلہ زن رہا وہيں کا وہيں
قصور زن کا نھيں ہے کچھ اس خرابي ميں
گواہ اس کي شرافت پہ ہيں مہ و پرويں
فساد کا ہے فرنگي معاشرت ميں ظہور!
کہ مرد سادہ ہے بےچارہ زن شناس نھيں
اقبال کي نظر ميں آزادي نسواں يا آزادي رجال کے نعرے کوئي معنی نھيں رکھتے بلکہ انتھائي گمراہ کن ہيں، کيونکہ عورت اور مرد دونوں کو مل کر زندگي کا بوجھ اُٹھانا ہوتا ہے، اور زندگي کو آگے بڑھانے اور سنوارنے کے لئے دونوں کے باھمي تعاون ربط اور ھما ھنگی کي ضرورت ہوتي ہے دونوں کے کامل تعاون کے بغير زندگي کاکام ادھورا اور اس کي رونق پھيکي رہ جاتي ہے، اس لئے ان دونوں کو اپنے فطري حدود ميں اپني صلاحيتوں کو بروئے کار لاتے ہوئے زندگي کو بنانے سنوارنے کا کام کرنا چاھئے اور ايک دوسرے کا ساتھي ثابت ہونا چاھئے نہ کہ  ایک دوسرے کا مدمقابل، چنانچہ آزادي نسواں کے بارے ميں وہ فيصلہ عورت پر ھي چھوڑ تے ہيں کہ وہ خود سوچے کہ اس کے لئے بہتر کيا ہے-
اس بحث کا کچھ فيصلہ ميں کر نھيں کر سکتا
گو خوب سمجھتا ہوں کہ يہ زھر ہے ، وہ قند
کيا فائدہ کچھ کہہ کے بنوں اور بھي معتوب
پھلے ھي خفا مجھ سے ہيں تہذيب کے فرزند
اس راز کو عورت کي بصيرت ھی کرے فاش
مجبور ہيں ، معذور ہيں، مردان خرد مند
کيا چيز ہے آرائش و قيمت ميں زيادہ
آزادي نسواں کہ زمرد کا گلوبند!
abna 24


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Saturday - 2018 April 21