Thursday - 2018 Dec 13
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 183366
Published : 9/9/2016 21:31

تھران کی نماز جمعہ کے بعد نمازیوں نے آل سعود کی مذمت کی

تھران میں نماز جمعہ کے بعد دسیوں ھزار افراد نے احتجاجی مظاہرے کرکے آل سعود اور آل خلیفہ کی مذمت کی۔

تھران میں نماز جمعہ کے بعد دسیوں ھزار افراد نے احتجاجی مظاہرے کرکے آل سعود اور آل خلیفہ کی مذمت کی۔
مظاہرین نے مردہ باد آل سعود اور مردہ باد آل خلیفہ کے نعرے لگائے اور ان دونوں حکومتوں کی خیانت آمیز پالیسیوں کی مذمت کی۔ جمعے کی نماز کے بعد نمازیوں نے شہدائے منی کو خراج عقیدت پیش کیا اور گذشتہ سال پیش آنے والے اس واقعے پر افسوس ظاہر کیا۔ واضح رہے کہ گذشتہ برس حج میں آل سعود کی غلط تدبیروں کی بنا پر رمی جمرات کے موقع پر ہزاروں حجاج کرام جاں بحق ہوگئے تھے۔
سعودی حکام کا کہناہے کہ سانحہ منا میں سات سو ستر افراد مارے گئے ہیں جبکہ ایسوشی ایٹیڈ پریس نے کہا ہےکہ دوہزار چار سو چھبیس حاجی مارے گئے ہیں۔ ایرانی حکام کا کہنا ہے کہ گذشتہ سال منی میں سات ہزارسے زائد حجاج مارے گئے ہیں اور ان میں ایرانیوں کی تعداد چار سو ساٹھ ہے۔تہران میں نماز جمعہ کے بعد نمازیوں نے بحرین میں آل خلیفہ کے تشدد آمیز اقدامات کی بھی مذمت کی اوراس حکومت کی جانب سے آیت اللہ شیخ عیسی قاسم کی شہریت منسوخ کئے جانے کی بھی مذمت کی۔
دوسری جانب بحرین کے انسانی حقوق مرکز نے آیت اللہ شیخ عیسی قاسم کی شہریت منسوخ کئے جانے کی مذمت کی ہے اور اسے ایک ظالمانہ اور عالمی قوانین کے خلاف فیصلہ قراردیا ہے۔
سحر ٹی وی


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Thursday - 2018 Dec 13