Sunday - 2018 Dec 16
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 183383
Published : 11/9/2016 17:36

عالم اسلام سانحہ منیٰ پر احتجاج کرے

امور حج و زیارت میں ولی فقیہ کے نمائندے نے کہا ہے کہ ایران وہ واحد ملک ہے جس نے سانحہ منیٰ پر احتجاج کیا اور اپنے احتجاج پر ڈٹا ہوا ہے۔  

امور حج و زیارت میں ولی فقیہ کے نمائندے نے کہا ہے کہ ایران وہ واحد ملک ہے جس نے سانحہ منیٰ پر احتجاج کیا اور اپنے احتجاج پر ڈٹا ہوا ہے۔
ارنا کی رپورٹ کے مطابق حجۃ الاسلام علی قاضی عسکر نے ہفتے کو قم میں شہدائے  منیٰ کی یاد میں منعقدہ مجلس میں کہا کہ بڑے افسوس کی بات ہے کہ سعودی عرب نے اسلامی ملکوں کے سربراہوں کو پیسہ دے کر خرید لیا اور یھی مسئلہ اس بات کا باعث بنا کہ کوئی سانحہ  منیٰ پراحتجاج نہ کرے۔
علی قاضی عسکر نے کہا کہ سانحہ  منیٰ آل سعود کی بدانتظامی اور نااھلی کی بناپر معرض وجود میں آیا اور یہ بدنما داغ مناسک حج کی تاریخ میں آل سعود کے دامن پر باقی رہے گا،انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ عالم اسلام کو سعودی حکومت سے سوال کرنا چاہیے، انہوں نے کہاکہ سعودی عرب کی حکومت نے سانحہ  منیٰ کو قضا و قدر الھی قراردے کر اپنی نااہلی چھپانے کی کوشش کی ہے جبکہ آج عالم اسلام اس طرح کی باتوں سے فریب میں نہیں آتا۔
علی قاضی عسکر نے کہا کہ سعودی عرب کو چاہئے کہ حج کا انتظام عالم اسلام کے سپرد کردے کیونکہ کعبہ معظمہ اور مسجد الحرام تمام مسلمانوں سے متعلق ہے،حج و زیارات کے امور میں ولی فقیہ کے نمائندے نے کہا کہ سعودی عرب، شام، بحرین اور یمن میں ان ملکوں کے مسلمان عوام کے سروں پربم برسانے کے لئے بے تحاشہ پیسہ خرچ کررہا ہے لیکن حج کا صحیح انتظام کرنے اورحجاج کرام کے رفاہ اور انہیں سہولتیں دینے کے لئے پیسہ خرچ نھیں کرسکتا۔
واضح رہے گذشتہ سال چوبیس ستمبر دوہزار پندرہ کو رمی جمرات کرتے ہوئے آل سعود کی نا اھلی اور بدانتظامی کی وجہ سے ھزاروں حجاج شھید ہوگئے تھے جن میں ایرانیوں کی تعداد چار سو چونسٹھ تھی ۔
 سحر ٹی وی


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Sunday - 2018 Dec 16