Thursday - 2018 Dec 13
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 183386
Published : 11/9/2016 17:56

اس سال کاحج بعض اسلامی ملکوں کے حجاج کے بغیر ہی انجام پارہا ہے

اس سال یعنی چودہ سو سینتیس ہجری قمری کا حج، بعض اسلامی ملکوں منجملہ ایرانی حجاج کے بغیر ہی انجام پارہا ہے۔

ارنا کی رپوٹ کے مطابق اس سال کا حج، آٹھ ذی الحجہ یوم الترویہ کو ایسے عالم میں شروع ہوا جب حجاج کرام مکہ مکرمہ سے صحرائےعرفات کی طرف روانہ ہوئے لیکن ان حاجیوں میں بعض اسلامی ملکوں منجملہ ایران یمن اور شام کے حاجی شامل نہیں ہیں۔ سعودی عرب کے میڈیا نے اعلان کیا کہ پندرہ لاکھ حاجی، شہر مکہ سے عرفات کی طرف روانہ ہوگئے ہیں۔ یہ ایسے عالم میں ہے کہ خبری ذرائع کے مطابق، گذشتہ برس کی نسبت اس سال حاجیوں کی تعداد کم ہے۔
موصولہ رپورٹوں کے مطابق حجاج کرام آج لباس احرام پہن کر صحرائے عرفات کی طرف روانہ ہوئے تا کہ وہاں رات گذار سکیں اور کل اتوارکو سورج ڈوبنے کے وقت، عرفات سے مشعر الحرام کی طرف روانہ ہوں اور صبح تک مشعر الحرام میں رہیں اور اسکے بعد منی کی طرف روانہ ہوجائیں اور یہاں پر وقوف کریں،اس سال کا حج ایسے عالم میں شروع ہوا ہے کہ اس میں بعض اسلامی ملکوں منجملہ ایران کے حجاج نہیں ہیں اور عالم اسلام گذشتہ سال رونما ہونے والے سانحہ منی کو نہیں بھلا پایا ہے۔ سعودی عرب نے اس سال بے بنیاد بہانوں سے ایرانیوں کو حج میں شامل ہونے سے روک دیا ہے۔ واضح رہے گذشتہ برس رمی جمرات کے موقع پر سعودی عرب کی نااہلی اور بدانتظامی کی وجہ سے ہزاروں حاجی شہید ہوگئے تھے۔
 سحر ٹی وی


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Thursday - 2018 Dec 13