Tuesday - 2018 August 14
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 183696
Published : 9/10/2016 13:21

کراچی میں ایک بار پھر شیعہ مسلمانوں کی ٹارگٹ کلنگ شروع

گلستان جوہر کے علاقے میں امام بارگاہ امام زین العابدین (ع) کے متولی اور ماہر تعلیم سید منصور زیدی کو انکے بیٹے عمار زیدی کے ہمراہ گھر کے سامنے نشانہ بنایا گیا،حملہ آور ارتکاب جرم کے بعد فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے۔
ولایت پورٹل:
شہر قائد میں ایک مرتبہ پھر بے گناہ عزاداران سید الشہداء کو سفاکانہ حملوں میں دہشتگردی کا نشانہ بنایا گیا ہے۔ اہدافی قاتلوں نے متولی امام بارگاہ سید منصور زیدی اور ان کے بیٹے سید عمار زیدی کو گلستان جوہر میں نشانہ بنایا،تکفیری قاتلوں کی فائرنگ سے سید منصور زیدی موقع پر ہی شہید جبکہ ان کے فرزند سید عمار زیدی متعدد گولیاں لگنے سے شدید زخمی ہوگئے ہیں،جن کا علاج آغا خان ہسپتال میں جاری ہے، جبکہ ڈاکٹرز نے ان کی حالت تشویشناک بتائی ہے۔
واضح رہے کہ مسلح موٹر سائیکل سواروں نے باپ اور بیٹے کو ان کے گھر کے سامنے ہی فائرنگ کرکے نشانہ بنایا۔ سید منصور زیدی ماہر تعلیم، مہران پبلک سکول شاہ فیصل کالونی کے مالک،پرائیویٹ اسکول ایسوسی ایشن کے جنرل سیکرٹری،امام بارگاہ زین العابدین گلستان جوہر کالونی بلاک آٹھ کے متولی اور 7ویں محرم کے جلوس کے پرمٹ ہولڈر تھے،پولیس کے مطابق جائے وقوعہ سے گولیوں کے آٹھ خول ملے ہیں،اسی طرح اہدافی قتل کے ایک دوسرے سانحہ میں مزید دو افراد زخمی ہوئے ہیں،ان زخمیوں کا تعلق بھی اہل تشیع کمیونٹی سے بتایا جاتا ہے اور اسی جرم میں انہیں نشانہ بنایا گیا۔
ابنا




آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Tuesday - 2018 August 14