Saturday - 2018 Sep 22
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 183728
Published : 11/10/2016 18:24

قاہرہ میں لگائی انتظامیہ نےعزاداری پر پابندی

مصر کی پولیس نے دارالحکومت قاہرہ کے فاطمیہ علاقے میں نو محرم کی ‏عزاداری پر روک لگا دی ہے۔


ولایت پورٹل:موصولہ خبروں میں کہا گیا ہے کہ قاہرہ میں شیعہ مسلمان نماز عصر کے بعد شب عاشور کی مناسبت سے فاطمیہ نامی علاقے میں امام حسین علیہ السلام اسکوائر اور اس سے ملحقہ مسجد میں عزاداری سیدالشہدا کرنا چاہتے تھے لیکن مصری پولیس نے انہیں عزاداری کرنے سے روک دیا۔
کلمتی مصر نامی نیوز ویب سائٹ نے خبر دی ہے کہ مصری پولیس نے نماز کے بعد عزاداروں کو مقام راس الحسین اور مسجد امام حسین علیہ السلام میں جانے سے روک دیا- مصر کے شیعہ مسلمان ایام محرم میں راس الحسین علیہ السلام نامی مقام اور اس سے متصل مسجد میں مخصوص شمعیں روشن کرتے ہیں اور مجالس عزا برپا کرکے امام عالیمقام اور ان کے بہتر اصحاب باوفا کی مظلومانہ شہادت کا غم مناتے ہیں۔
خبروں میں بتایا گیا ہے کہ مصر کی وزارت اوقاف کے حکم پر پولیس نے مقام راس الحسین سے ملحقہ مسجد کے دروازاے بند کر دئے ہیں۔ خبروں میں کہا گیا ہے کہ مصر کی وزارت اوقاف اور وزارت داخلہ کی ہم آہنگی سے عزاداری سید الشہدا کو روکنے کے لئے ایک خصوصی کنٹرول روم قائم کیا گیا۔
مصر کی وزارت اوقاف نے مصری شیعہ مسلمانوں کو دھمکی دی ہے کہ مساجد میں کسی بھی قسم کی مذہبی رسومات اور عزاداری کے اجتماعات نہیں ہونے چاہئیں اور اگرکسی نے  ایسا کرنے کی کوشش کی تو اس کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔
مقام رأس الحسین  اور مسجد امام حسین علیہ السلام قاہرہ کے قدیم محلے میں واقع ہے- اس محلے کو حی الحسین کے نام سے شہرت حاصل ہے،بعض لوگوں کا کہنا ہے کہ سنہ ا کسٹھ ہجری میں واقعہ عاشورا کے بعد اسیران کربلا کو مصر کے راستے شام لے جایا گیا اور امام حسین علیہ السلام کے سرمبارک کو اسی مقام پر کچھ دیر کے  لئے رکھا گیا تھا-
لیکن کچھ لوگوں کا کہنا ہے کہ مصر کی فاطمی حکومت کا حاکم وقت صلیبی جنگوں کے دوران امام حسین علیہ السلام کا سرمبارک فلسطین کے علاقے عسقلان سے قاہرہ لے آیا اور اس نے اسی مقام پر دفن کیا،سید الشہداء حضرت امام حسین علیہ السلام کے سرمبارک کے دفن ہونے کے مقام کے بارے میں مختلف اقوال ہیں لیکن یہ قول اور روایت سب سے زیادہ معتبر ہے کہ حضرت امام زین العابدین علیہ السلام نے اپنے پدربزرگوار امام حسین علیہ السلام کے سرمبارک کو واپس کربلا لا کر ان کے جسم اطہر کے ساتھ ہی دفن کیا اور اسی روایت کو شیعہ مسلمان اور بیشتر مسلمان تسلیم کرتے ہیں۔
سحر ٹی وی



آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Saturday - 2018 Sep 22