Monday - 2018 June 25
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 184044
Published : 2/11/2016 15:1

داعش عام شہریوں کو انسانی ڈھال کے طور پر استعمال کر رہا ہے

اقوام متحدہ کے ہائی کمشنر برائے انسانی حقوق کی ترجمان نے کہا کہ داعش دہشت گرد گروہ عام شہریوں کو انسانی ڈھال کے طور پر استعمال کر رہا ہے۔

ولایت پورٹل:
العالم چینل کی رپورٹ کے مطابق  اقوام متحدہ کے ہائی کمشنر برائے انسانی حقوق کی ترجمان ریوینا شمداسین Revina Shamdasain نے کہا ہے کہ داعش  تقریبا پچیس ہزارعراقیوں کو حمام العلیل علاقے سے باہر نکال کر ان کو موصل کی جنگ میں انسانی ڈھال کے طور پر استعمال کرنا چاہتا ہے۔
شمداسین نے کہا کہ داعش دہشت گرد گروہ نے منگل کی رات کو عراق کی سابق سیکورٹی فورسیز کے چالیس افراد کو موصل کے قریب قتل کردیا اور ان کی لاشوں کو دریائے دجلہ میں ڈال دیا۔
عراق میں اقوام متحدہ کے زیراہتمام ہائی کمیشن برائے معاونت عراق«یونامی» نے بھی ایک رپورٹ میں کہا ہے کہ اکتوبر کے مہینے میں دہشت گردوں کے ہاتھوں گیارہ سو بیس عام شہری مارے گئے ہیں جبکہ زخمیوں کی تعداد ایک ہزار سے زیادہ ہے۔
واضح رہے کہ عراق کے مختلف شہروں خاص طورپر شہر موصل میں داعش دہشت گردوں کے خلاف عراقی فوج کو ملنے والی پیہم کامیابیوں کے بعد یہ دہشت گرد گروہ اب عام شہریوں کا قتل عام کر رہے ہیں۔
sahartv



آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Monday - 2018 June 25