Saturday - 2018 july 21
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 184823
Published : 29/12/2016 18:55

وادی کشمیر کے ممتاز عالم دین رخصت

کشمیر کے حوزہ علمیہ امام رضا علیہ السلام کے مدیر حجۃ السلام و المسلمین مولانا سید مقصود علی رضوی عارضہ قلبی (ہارٹ اٹیک) کی بنا پر قم المقدسہ کےایک ہسپتال میں دار فانی سے رخصت ہو گئے۔

ولایت پورٹل:مرحوم مولانا کا ہندوستان کے زیر انتظام کشمیر کےبزرگ اور فعال علماء میں شمار ہوتا تھا آپ نے کشمیر میں دینی تعلیمات کو فروغ دینے اور اسلامی انقلاب سے لوگوں کو آشنا کرنے میں کافی تک و دو کی،آپ نے نجف اشرف سے بنیادی علوم حاصل کرنے کے بعد انقلاب اسلامی ایران کی کامیابی کے اوائل میں قم المقدس کا رخ کیا اور حوزہ علمیہ قم میں دینی تعلیم کو جاری رکھا،حصول علم سے فراغت کے بعد کشمیر میں جامعہ امام رضا علیہ السلام کا قیام عمل میں لایا اور بیس پچیس سال سے اس دینی ادارے میں مدیریت کے فرائض انجام دیئے، کشمیری عوام میں دینی شعور کو بیدار کرنے میں آپ کے ادارے نے ایک اہم رول ادا کیا ہے، ساتھ ہی ساتھ آج سے دس سال قبل مولانا موصوف نے دختران ملت کے لئے ایک اعلیٰ کالج بنام جامعۃ الزہرا (س) کا سنگ بنیاد بھی رکھا، یہ دونوں ادارے سر زمین کشمیر پر اپنی خاص افادیت و اہمیت رکھتے ہیں، ان مدارس میں دینی تعلیم کے علاوہ طلباء و طالبات کو جدید علوم سے بھی آراستہ کیا جاتا ہے، مولانا مقصود علی رضوی نے اپنی خاص فعالیت سے ان اداروں کو کشمیری عوام کی شان ثابت کردیا تھا،خداوند مرحوم کو ان تمام خدمات کے صدقے کروٹ کروٹ جنت نصیب کرے اور آپ کے  پسماندگان خصوصا آپ فرزند مولانا باقر صاحب اور مولانا سید علی صاحب کو یہ مشن جاری رکھنے کی توفیق عنایت فرمایے کہ قوم آج انبیاء کے اس مشن کی ھر دور سے زیادہ محتاج ہے۔
قابل کر ہے کہ مرحوم کی نماز جنازہ آج دوپہر حرم مطہر حضرت معصومہ سلام اللہ علیہا میں اد اکی گئی جس میں حوزۂ علمیہ کے طلاب اور فضلاء نیز قم میں موجود بر صغیر کے علماء حضرات نے کثیر تعداد میں شرکت کی علاوہ از ایں اسلامی جمہوریہ ایران کی کئی ایک اہم شخصیات من جملہ زعیم جامعۃ المصطفیٰ العالمیہ آیۃاللہ العظمیٰ ڈاکٹر اعرافی دام ظلہ العالی اوررہبر معظ کے بین الاقوامی امورکے مشیر حجت الاسلام المسلمین جناب قمی صاحب بھی تشیع جنازہ میں موجود تھے،مولانا کی وفات کے بعدہی سے تعزیتی پیغامات کا سلسلہ جاری ہوگیا ہے جن میں ہندوستان میں رہبر معظم کے نمائندہ حجت الاسلام المسلمین جناب ڈاکٹر مہدی مہدوی پورکا تسلیتی پیغام سر فہرست ہے جس میں انھوں مولانا کی خدمات کو سراہتے ہوئےآپ کو اسلامی انقلاب کا مدافع اور حامی قراردیا ہے نیزآپ کی وفات کو علاقہ کے تشیع میں خلا قرار دیتے ہوئے تمام شیعیان کشمیر خاص طور پر اپ کے لواحقین کی خدمت میں تعزیت پیش کی ہے۔
ابنا




آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Saturday - 2018 july 21