Wed - 2018 Dec 12
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 185324
Published : 29/1/2017 16:48

نو مولود بچے کو ماں کا پہلا تحفہ

اگر ماں کا دودھ بچے کیلئے ٹھیک ہے تو اس سے بہتر غذا بچے کو اور کوئی نہیں مل سکتی ہر ماں کو چاہئے کہ وہ ضرور دودھ پلائے تاکہ بچے کے اندر ماں کی محبت آجائے اگر ماں دودھ ہی نہیں پلائے گی تو ماں کی محبت بچے کے اندر کیسے آئے گی۔


ولایت پورٹل:
جب اللہ تعالیٰ بچے کی ولادت فرمادیتا ہے تو ماں کیلئے یہ انتہائی خوشی کا موقع ہوتا ہے اور بچے کیلئے پہلا تحفہ جو ماں پیش کر سکتی ہے وہ ماں کا اپنا دودھ ہوتا ہے ماں کو چاہئے کہ وہ بچے کو اپنا دودھ ضرور پلائے، ہاں اگر دودھ کم ہے یا میڈیکلی اعتبار سے ٹھیک نہیں ہے اور بچے کیلئے نقصان دہ ہے تو یہ اور بات ہے لیکن اگر ماں کا دودھ بچے کیلئے ٹھیک ہے تو اس سے بہتر غذا بچے کو اور کوئی نہیں مل سکتی ہر ماں کو چاہئے کہ وہ ضرور دودھ پلائے تاکہ بچے کے اندر ماں کی محبت آجائے اگر ماں دودھ ہی نہیں پلائے گی تو ماں کی محبت بچے کے اندر کیسے آئے گی عام طور پر بعض خواتین اپنی (Smartners)کو سامنے رکھتے ہوئے دودھ پلانے سے گھبراتی ہیں اور شروع ہی سے بچے کو ڈبوں کے دودھ پر لگا دیتی ہیں پھر جب ڈبے کا دودھ پی کر بچے بڑے ہوتے ہیں تو ماں کو ماں نہیں سمجھتے،اسی لئے کسی شاعر نے کیا خوب کہا ہے:
                     طفل سے بوآئے کیا ماں باپ کے اطوار کی                   دودھ ڈبے کا پیا تعلیم ہے سر کا رکی
جب نہ دین کی تعلیم پائی نہ ماں کا دودھ پیا تو پھر اس میں اچھے اخلاق کہاں سے آئیں گے۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Wed - 2018 Dec 12