Saturday - 2018 August 18
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 186365
Published : 27/3/2017 15:43

بیوی کے فرائض:

کسی غیر کا تصور بھی نشیمن جلا سکتا ہے(۲)

محترم خاتون! اگر آپ کے شوہر کو یہ احساس ہوجائے کہ آپ دوسرے مردوں کے بارے میں سوچتی ہیں، تو وہ آپ کی نسبت بدگمان ہوجائے گا،اس کے دل سے آپ کی محبت کم ہوجائے گی ، اور وہ زندگی اور گھر سے لاتعلقی کا اظہار کرنے لگے گا پس آپ کو احتیاط کرنا چاہیئے کہ آپ غیر مردوں کی تعریف نہ کریں اور ان کو اہمیت نہ دیں،ان کے ساتھ ہنسی مذاق نہ کریں، چونکہ مرد بہت ہی حساس اور غیرت مند ہوتے ہیں اور انہیں یہ بھی برداشت نہیں ہوتا کہ ان کی بیوی کسی غیر مرد کی تصویر سے بھی اظہار ہمدردی کرے۔


ولایت پورٹل:قارئین کرام!ہم نے بیوی کے فرائض میں سے گذشتہ کالم میں جس فرض کا ذکر کیا تھا وہ یہ ہے کہ شادی کے بعد بیوی کا سارا ہم و غم صرف اس کا شوہر اور اس کے بچے اور گھر ہونا چاہیئے چونکہ شادی کے بعد اگر وہ کسی غیر کے متعلق سوچے گی تو یہ مرد کی غیرت کو للکارنے کے مساوی شمار ہوتا ہے اور اس کے سبب یہ کاشانہ محبت مسمار ہوسکتا ہے جسے اس نے خون جگر پی کر بنایا تھا،چنانچہ ہماری پہلی گفتگو سے متصل ہونے کے لئے اس لنک پر کلک کیجئے!
کسی غیر کا تصور بھی نشیمن جلا سکتا ہے(۱)
گذشتہ سے پیوستہ:اسی ضمن میں ایک خبر ملاحظہ فرمائیں:کچھ سال پہلے کی بات ہےکہ ایک ۱۸ سالہ خاتون جسکا نام... ....تھا،ایک رات وہ گھر سے  فرار کرگئی جسے  نعمت آباد میں (Gendarmerie Officers )  کے ہاتھوں پکڑ لیا گیا، اس نے پولیس اسٹیشن میں کہا: تین سال پہلے میری شادی فلاں  ...... شخص کے ساتھ ہوئی تھی لیکن آهستہ آهستہ مجھے یہ احساس ہونے لگا کہ وہ مجھے پسند نہیں ہے ،چنانچہ میں جب بھی اپنے  شوہر کی شکل  کو بعض دوسرے  افراد کی شکلوں کے ساتھ مقایسہ کرتی تھی تو مجھے افسوس  ہوتا تھا کہ میں کیوں اس مردکی بیوی بنی ہوں۔(اطلاعات  3،اسفند 1350)
محترم خاتون! اگر آپ بدنصیب نہیں ہونا چاہتیں اور آپ کو  سیاہ دن دیکھنا پسند نہ ہوں نیز یہ بھی چاہتی ہیں کہ آپ روحانی اور نفسیاتی بیماری میں مبتلا نہ ہوں بلکہ خوش و خرم اپنی زندگی بسر کریں تو ان ہوس بازی ، تاک جھانک اور الٹی سیدھی تمناؤں سے گریز کریں ،اپنے  شوہر کے  علاوه کسی کو بھی اہمیت مت دیں، غیر مردوں  کی تعریف نہ کریں،اور نہ ہی ان کا خیال دل میں لائیں، اور یہ تمنا نہ کریں:اے کاش فلاں  شخص میرے رشتہ کو آجاتا ، کاش فلاں  شخص  کے ساتھ میری  شادی ہوجاتی ، کاش میرے شوہر کا کام ایسا ہوتا ،کاش میرے شوہر کی شکل  فلاں آدمی کی طرح ہوتی ،کاش  ایسا ہوجاتا ویسا ہوجاتا، ہم  نہیں جانتے کہ یہ غلط افکار اور خام خیالیاں آپ کو کیا  فائدہ پہونچائے گیں؟ کیوں اپنی اور اپنے شوہر کی زندگی میں زہر گھول رہی ہیں؟ کیوں مہرو محبت، ختم کرکے  شادی شدہ زندگی کی بنیاد کو متزلزل  کررہی ہیں؟ آپ کو یہ کیسے معلوم کہ اگر فلاں شخص کے ساتھ آپ کی شادی ہوجاتی تو آپ سوفیصدی خوش  رہتیں؟ آپ صرف اس کے ظاہر کو دیکھ رہی ہیں نہ جانے اس میں کتنے ایسے عیوب موجود ہوں کہ اگر آپ انکے بارے میں جان لیں تو اپنے شوہر کو اس پر ہر اعتبار سے ترجیح دیتیں، اور آپ کو کہاں سے معلوم کہ ایسے افراد کی بیویاں ان سے بلکل  راضی  ہی ہیں؟
محترم خاتون! اگر آپ کے  شوہر کو  یہ احساس  ہوجائے کہ آپ دوسرے  مردوں کے بارے میں سوچتی ہیں، تو وہ آپ کی نسبت بدگمان ہوجائے گا،اس کے دل سے آپ کی محبت کم ہوجائے گی ، اور وہ زندگی اور گھر سے لاتعلقی کا اظہار کرنے لگے گا پس آپ کو احتیاط کرنا چاہیئے کہ آپ غیر مردوں کی تعریف نہ کریں اور ان کو اہمیت نہ دیں،ان کے ساتھ ہنسی مذاق نہ کریں، چونکہ مرد بہت ہی حساس اور غیرت مند ہوتے ہیں اور انہیں یہ بھی برداشت نہیں ہوتا کہ ان کی بیوی  کسی غیر مرد کی تصویر سے بھی اظہار ہمدردی کرے۔
چنانچہ پیغمبر اکرم(ص)ارشاد فرماتے ہیں:اگر شوہر دار عورت کسی نامحرم مرد کو ہوس کی نگاہوں سے دیکھے تو وه  پروردگار عالم کے  شدید غضب کا شکار ہوگی۔(بحار الانوار،ج 104،ص 39)
 


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Saturday - 2018 August 18