Saturday - 2018 Dec 15
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 186725
Published : 17/4/2017 16:52

قیامت کے دن نماز کی شکل

حضرت امام جعفر صادق(ع) فرماتے ہیں کہ انسان نماز کو فضیلت کے وقت ادا کرے اور نماز کے تمام حدود کا خیال رکھتے ہوئے ادا کرے تو فرشتے اس کی نماز کو آسمان پر لے جاتے ہیں اور اس کی نماز کی شکل نورانی ہوتی ہے،اور وہ نماز بندے سے کہتی ہے کہ اللہ تیری حفاظت کرے جس طرح تو نے میری حفاظت کی ہے۔

ولایت پورٹل:معصومین(ع)سے روایت ہے کہ جب قیامت کا دن ہوگا قبریں پھٹیں گی اور مردے باہر نکلیں گے اور دیکھیں گے کہ ایک زخمی نوجوان کھڑا ہوا ہے اور اس کے بدن سے خون نکل رہا ہے تو مردے پوچھیں گے کہ تو کون ہے؟ تو وہ زخمی نوجوان جواب دے گا کہ تو نے مجھے نہیں پہچانا میں تیری نماز ہوں،تو وہ شخص پوچھے گا کہ تیری یہ حالت کس نے بنائی ؟ تو نوجوان کہے گا کہ تو نے بنائی، جب تو نماز پڑھتا تھا تو کبھی دل میں دنیا کا خیال، کبھی مال کا، کبھی اولاد کا خیال لاتا تھا یہی وجہ ہے کہ میری یہ حالت ہوگئی ہے،لیکن اس کے باوجود میں اس لئے اس شکل میں بھی آیا ہوں تاکہ تجھے میدان حشر تک پہنچادوں ورنہ تم سیدھے جہنم میں چلے جاؤ گے۔
حضرت امام جعفر صادق(ع) فرماتے ہیں کہ انسان نماز کو فضیلت کے وقت ادا کرے اور نماز کے تمام حدود کا خیال رکھتے ہوئے ادا کرے تو فرشتے اس کی نماز کو آسمان پر لے جاتے ہیں اور اس کی نماز کی شکل نورانی ہوتی ہے،اور وہ نماز بندے سے کہتی ہے کہ اللہ تیری حفاظت کرے جس طرح تو نے میری حفاظت کی ہے،لیکن اگر کوئی نمازی نماز کے حدود کا خیال نہ رکھتے ہوئے نماز پڑھے تو اس کی نماز کی شکل سیاہ ہوگی اور وہ نماز بندے سے کہے گی کہ جس طرح تونے مجھے ضائع کیا ہے خدا بھی تجھے اسی طرح ضائع کرے،لہٰذا اب یہ انسان کے اوپر ہے کہ وہ چاہے تو اپنی نماز کو نورانی شکل عطا کرے اور اگر چاہے تو سیاہی عطا کرے۔

 


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Saturday - 2018 Dec 15