Monday - 2018 Nov 19
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 188127
Published : 2/7/2017 15:35

چنئی میں انہدام جنت البقیع پر عظیم الشان سیمینار

اس سیمینار میں اختتامی تقریر کرتے ہوئے آندھرا پردیش شیعہ علماء بورڈ کے صدر مولانا سید عباس باقری نے کہا کہ انہدام جنت البقیع کے 94 سال بعد بھی بقیع کی سرزمين پر اہل بیت علیہم السلام کے قبور اپنی غربت کا مرثیہ پڑھرہے ہیں۔


ولایت پورٹل:چنئی، 2 جولائی ٧شوال المکرم بروز اتوار 11بجے دن میں مرکز فیض اسلام، چنئی میں ساؤتھ انڈیا شیعہ علماء کونسل کے زیر اہتمام انہدام جنت البقیع کے سلسلے میں ایک عظیم الشان سیمینار منعقد ہوا جس میں چیف شیعہ قاضی گورنمنٹ آف تامل ناڈو،  امام جمعہ تھاوزنڈ لائیٹس مسجد مولانا آغا غلام محمد مھدی خان نے افتتاحی تقریر کرتے ہوئے کہا کہ آل سعود کی ناپاک حکومت نے بقیع میں موجود اہل بیت علیہم السلام اور اصحابِ رسول(ص) کے مقدس مزارات کو ڈھاکر دیرینہ اسلام دشمنی کا ثبوت دیا ہے،لہٰذا ہم ان سے یہ توقع نہیں رکھتے کہ یہ منہدم شدہ مزارات کی تعمیر جدید کرینگے اسی لئے ہم ان سے مطالبہ بھی نہیں کرینگے کہ یہ اپنے ناپاک ہاتھوں سے بقیع کی تعمیر جدید کروائیں بس ہم تو اس دن کا انتظار کررہے ہیں جس دن ان مقدس سر زمینوں سے  غاصبوں کا قبصہ ختم ہوجائے گا  خدا نے چاہا تو وہ دن دور نہیں ہے کہ پھر اہل بیت(ع) کے چاہنے والے خود اپنے ہاتھوں سے مقدس مزاروں پر تعمیر جدید کرینگے اس سیمینار میں اختتامی تقریر کرتے ہوئے آندھرا پردیش شیعہ علماء بورڈ کے صدر مولانا سید عباس باقری نے کہا کہ انہدام جنت البقیع کے 94 سال بعد بھی بقیع کی سرزمين پر اہل بیت علیہم السلام کے قبور  اپنی غربت کا مرثیہ پڑھرہے ہیں،اس عظیم مصیبت پر عالم اسلام غمناک ہے اس سیمینار میں جنرل سکریٹری آندھرا پردیش شیعہ علماء بورڈ، امام جمعہ مچھلی پٹنم مولانا مرزا راشد حسین اور ساؤتھ انڈیا شیعہ علماء کونسل کے جنرل سکریٹری مولانا مرزا رضوان علی اصفہانی نے بھی اس سلسلے میں اظہارِ خیال کیا مولانا افتخار حسین معروفی نے نظامت کے فرائض انجام دیئے اس سیمینار میں مؤمنین و مؤمنات کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔





آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Monday - 2018 Nov 19