Tuesday - 2018 Nov 13
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 188195
Published : 5/7/2017 15:35

قطری حکومت کا حماس کو نکالنے اور قرضاوی کو استانبول بھیجنے پر آمادگی کا اظہار

مبصرین کے مطابق قطر کے رویے میں یہ نرمی اس وقت آئی جب امریکی صدر ٹرمپ نے سعودی شاہ سلمان بن عبد العزیز اور امیر قطر شیخ تمیم بن حمد نیز ابوظہبی کے ولی عہد محمد بن زائد سے ٹیلیفونک رابطہ کیا تھا۔


ولایت پورٹل:قطر نے خلیجی ممالک کے ساتھ درپیش بحران کو ختم کرنے کے لئے سعودی عرب اور اس کے ہمنوا ممالک کی شرائط کے آگے کافی حد تک لچک کا مظاہرہ کیا ہے،تفصیلات کے مطابق قطر نے اپنے ہمسایہ ممالک سے روابط بحال کرنے کے لئے سعودی اور اس کے ہمنوا ممالک کی شرائط پر نرمی دکھاتے ہوئے مثبت جواب دے دیا ہے۔
جس کے تحت قطری حکومت نے دوحہ سے حماس کے عہدیداروں کو نکالنے پر بھی آمادگی کا اظہار کر دیا ہے اور یوسف قرضاوی کو خاموش رہنے بلکہ انہیں قطر سے ترکی منتقل کرنے کیلئے بھی حامی بھر لی ہے اور مصر کے خلاف الجزیرہ کے حملوں کو روکتے ہوئے ماضی میں ہونے والے نقصان کی تلافی پر بھی رضامندی ظاہر کر دی ہے،جبکہ اس بات کا بھی امکان ظاہر کیا جا رہا ہے کہ قطر ایران سے اپنے تعلقات کو محدود کر دے گا۔
خلیجی ممالک کے مطالبات پر لچکدار صورتحال قطری وزیر خارجہ کے کویت دورے کے موقع پر سامنے آئی ہے جب انہوں نے امیر کویت شیخ صباح الاحمد جابر الصباح سے ملاقات کی جو شروع سے ہی اس معاملے میں ثالثی کا کرادار ادا کر رہے تھے۔
جبکہ مبصرین کے مطابق قطر کے رویے میں یہ نرمی اس وقت آئی جب امریکی صدر ٹرمپ نے سعودی شاہ سلمان بن عبد العزیز اور امیر قطر شیخ تمیم بن حمد نیز ابوظہبی کے ولی عہد محمد بن زائد سے ٹیلیفونک رابطہ کیا تھا۔
ابلاغ




آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Tuesday - 2018 Nov 13