Tuesday - 2018 Oct. 16
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 188257
Published : 8/7/2017 16:27

ہم نے سیاسی اسلام کو کمزور کرکے، تکفیری اسلام کو پروان چڑھایا:ٹونی بلئیرکا اعتراف

انگلینڈ کے سابق وزیراعظم ٹونی بلئیر نے کہا ہے کہ ان کا ملک مشرق وسطیٰ میں دینی تحریکوں کے بارے میں سخت پالیسی اپنائے۔

 
ولایت پورٹل:برطانوی سابق وزیراعظم نے اعتراف کیا ہے کہ: دین اور شریعت کی وجہ سے مشرقی وسطیٰ میں برطانیہ کو دو دہائیوں سے مشکلات کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ ایران دینی حکومت کی فکر عام کر رہا ہے، اور مصر میں اخوان کی بھی ایسی ہی سوچ ہے البتہ ان کو دبانے کے بعد کنارے لگا دیا گیا ہے۔
انہوں نے کہا: ہم نے فیصلہ کیا تھا کہ اسلام کے مقابلے کے لیے ایک سوچ تیار کی جائے جو اسلام کو پھیلنے سے روکے، اور وہابیت ایک شدت پسند فکر ہے جس سے مسلمانوں کے درمیان فتنہ پھیل سکتا ہے۔
انہوں نے آخر میں کہا کہ: انگلینڈ کی حکومت، اخوان جیسی سوچ جو مسلمانوں کی حکومت اور سیاست کی سوچ ہے اس کے بارے میں ہوشیار رہے
Iuvmpress





آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Tuesday - 2018 Oct. 16