Monday - 2018 Dec 10
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 188263
Published : 8/7/2017 17:37

خدا کب انسان کو اس کے حال پر چھوڑ دیتا ہے؟

غفلت سے نجات میں سعادت ہے کیونکہ غفلت انسان کو خدا کی بندگی سے روکتی ہے اور جب انسان خدا کی بندگی سے اپنے آپ کو بے نیاز سمجھنے لگتا ہے تو وہ خدا سے دور ہوجاتا ہے اور جب وہ خدا سے دور ہوجاتا ہے تو خدا بھی اس کو اسکے حال پر چھوڑ دیتا ہے۔


ولایت پورٹل:غفلت دل کی بیماریوں میں سے ایک سنگین ترین بیماری ہے،غفلت، تمام اچھے کاموں سے دور ہونے کا سبب ہے، غفلت انسان کی تمام برائیوں کا سبب ہوتی ہے کیونکہ غافل انسان کبھی بھی خدا اور اچھے کاموں کی طرف راغب نہیں ہوتا، دائمی ذکرِ الہی، تلاوتِ قرآن، اہل علم کے ساتھ نشست و برخاست، بری محفلوں سے اجتناب، فانی دنیا کی معرفت، گناہوں سے دوری اور موت کی یاد غفلت سے دور ہونے کے لئے اہم ترین اسباب ہیں۔
غفلت کے نقصانات بہت زیادہ ہیں جس کی طرف خداوند متعال نے قرآن مجید میں اس طرح اشارہ فرمایا ہے:وَلَا تَكُونُوا كَالَّذِينَ نَسُوا اللَّهَ فَأَنْسَاهُمْ أَنْفُسَهُمْ أُولَئِكَ هُمُ الْفَاسِقُونَ[سورۂ حشر، آیت:۱۹]
ترجمہ:اور خبردار ان لوگوں کی طرح نہ ہوجانا جنہوں نے خدا کو بھلا دیا تو خدا نے خود ان کے نفس کو بھی بھلا دیا اور وہ سب واقعی فاسق اور بدکار ہیں۔
غفلت سے نجات میں سعادت ہے کیونکہ غفلت انسان کو خدا کی بندگی سے روکتی ہے اور جب انسان خدا کی بندگی سے اپنے آپ کو بے نیاز سمجھنے لگتا ہے تو وہ خدا سے دور ہوجاتا ہے اور جب وہ خدا سے دور ہوجاتا ہے تو خدا بھی اس کو اسکے حال پر چھوڑ دیتا ہے۔
دعائے زہرا(س)



آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Monday - 2018 Dec 10