Tuesday - 2018 Oct. 16
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 188354
Published : 13/7/2017 16:51

امام صادق(ع) کی تحریک کے سربستہ اسرار کو عیاں کرنے کی ضرورت ہے:رہبر انقلاب

بے شک اگر علوی تحریک بھی کامیابی سے ہم کنار ہوتی اور شیعوں کے ائمہ(ع) یا ان کے منتخب شدہ افراد کے ہاتھ میں قدرت اور حکومت کااختیار آجاتا تو ہم آج علوی دعوت کے تمام سربستہ رازوں اور ان کی ہر طرف پھیلی ہوئی اور انتہائی خفیہ تنظیموں کے تمام رازوں سے مطلع ہوتے۔


ولایت پورٹل:یہ ضروری محسوس ہوتا ہے کہ امام جعفر صادق(ع) کی زندگی پر تحقیق کرنے والے افراد کے ساتھ پیش آنے والی ایک افسوس ناک ترین چیز کی جانب اشارہ کردیا جائے اور وہ یہ ہے کہ امام(ع) کی زندگی کے حالات بالخصوص آپ(ع) کی امامت کے ابتدائی ایام جو بنوامیہ کی حکومت کے آخری برسوں میں بسر ہوئے، ان پر ابہامات کا پردہ پڑا ہوا ہے،یہ مختلف قسم کے واقعات و حوادث سے بھرپور زندگی جس میں موجود کشمکش اور نشیب و فراز کو تاریخ کی سیکڑوں روایات کے درمیان دیکھا جاسکتا ہے، یہ نہ تو تاریخ میں اور نہ محدثین و تذکرہ نویسوں کے کلام میں کسی مرتب اور باہم مربوط شکل میں سامنے نہیں آئی ہے اور اس میں پیش آنے والے زیادہ تر حوادث کا زمانہ اور ان کی خصوصیات کا تعین نہیں ہوا ہے،تحقیق کرنے والوں پر لازم ہے کہ قرائن کی بنیاد پر اور اس زمانے کے مجموعی حالات کے مطالعے اور ہر روایت کا موازنہ ان معلومات کے ساتھ کرکے جو اس روایت میں مذکور افراد کے بارے میں دوسری کتابوں میں موجود ہیں، کسی حادثہ کے زمان و مکان اور خصوصیات کو دریافت کریں،شاید اس ابہام کو اور بالخصوص امام (ع)کی اپنے اصحاب کے ساتھ تنظیمی سرگرمیوں میں موجود ابہام کو خود اس کام کی حقیقت میں تلاش کرنا چاہیۓ۔
خفیہ اور منظم کام
خفیہ اور تنظیمی عمل کو معمول کے طور پر پوشیدہ عمل کے درست اصولوں کے مطابق ہمیشہ خفیہ رہنا چاہیۓ، اُس زمانے میں بھی مخفی تھا، اس کے بعد بھی مخفی رہے گا اور اس عمل کو انجام دینے والے افراد کی رازداری اس بات کی اجازت نہیں دیتی کہ کوئی اجنبی اس سے واقف ہوسکے،جب بھی وہ عمل اپنے نتیجہ تک پہنچے گا اور اس کی قیادت کرنے والے اور ماتحت افراد اقتدار کو اپنے ہاتھ میں لے لیں گے تو خود ہی اپنے خفیہ عمل کی باریکیوں کو برملا کر دیں گے،اسی وجہ سے اب عباسی دور کی بہت سی باریکیاں حتیٰ کہ بنوعباس کے سرداروں کے خصوصی احکامات اور اپنے تنظیمی ماتحتوں کے ساتھ ان کے خفیہ روابط تاریخ میں ثبت ہیں اور سب ان سے آگاہ ہیں۔
بے شک اگر علوی تحریک بھی کامیابی سے ہم کنار ہوتی اور شیعوں کے ائمہ(ع) یا ان کے منتخب شدہ افراد کے ہاتھ میں قدرت اور حکومت کااختیار آجاتا تو ہم آج علوی دعوت کے تمام سربستہ رازوں اور ان کی ہر طرف پھیلی ہوئی اور انتہائی خفیہ تنظیموں کے تمام رازوں سے مطلع ہوتے۔

 


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Tuesday - 2018 Oct. 16