Thursday - 2018 Sep 20
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 188616
Published : 25/7/2017 17:45

بارگاہ رسالتمآب(ص)میں علی(ع) کی قربت کا راز

قابل غور بات ہے کہ امام جعفر صادق (علیہ السلام) نے عبداللہ ابن ابی یعفور کو سچائی اور امانتداری کی صفات کو اپنانے کا حکم دیا ہے، لہذا ہمیں بھی یہ دو صفات اپنانی چاہئیں ،تاکہ ہمیں بھی امام وقت ،فرزند زہرا(س) دلبر حسین،امام زمانہ (عج) کے نزدیک کوئی اعتبار نصیب ہوجائے۔


ولایت پورٹل:اگر کوئی آدمی کسی بڑی شخصیت کے نزدیک بڑے مقام تک پہنچتا ہے تو اس آدمی کے کچھ خاص کام یا خاص صفات ہوتی ہیں، ورنہ مقام پانا ناممکن ہے،اب ہمیں یہ دیکھنا ہے کہ حضرت علی (علیہ السلام) نے رسول اللہ (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کی بارگاہ میں جو عظیم مقام پایا، اس کے اسباب کیا تھے؟
ابی کھمس امام جعفر صادق علیہ السلام کے ایک عظیم صحابی تھے،ایک مرتبہ کوفہ سے حج کے لئے آئے،واپسی پر اپنے وقت کے امام حضرت صادق آل محمد(ص) کی بارگاہ میں شرفیاب ہوئے،اور سلام و کلام کے بعد حضرت کے ایک نہایت مخلص صحابی،جناب عبد اللہ بن ابی یعفور کا سلام امام جعفر صادق (علیہ السلام) کی خدمت میں پیش کیا۔
حضرت امام صادق(ع) نے فرمایا:«عليك وعليه السلام إذا أتيت عبد الله فاقرأه السلام وقل له: إن جعفر بن محمد يقول لك: انظر ما بلغ به علي (عليه السلام) عند رسول الله (صلى الله عليه وآله) فالزمه، فإن عليا (عليه السلام) إنما بلغ ما بلغ به عند رسول الله (صلى الله عليه وآله) بصدق الحديث وأداء الأمانة».
ترجمہ:تم پر اور اُس پر سلام ہو، جب تم عبداللہ کے پاس جاؤ تو انھیں ہمارا سلام کہنا اور ساتھ میں میرا یہ پیغام بھی ان تک پہونچا دینا:جعفر ابن محمد(ع) تم سے سفارش و نصیحت کرتے ہیں کہ تم اس امر میں غور و فکر کرو کہ حضرت علی (علیہ السلام) رسول اللہ (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کے نزدیک  مقام ارفع تک کس (صفت کے) ذریعہ پہنچے،اور پھر تم اس (صفت) کو اپناؤ، یقیناً علی علیہ السلام ،رسول اللہ (صلی اللہ علیہ وآلہ) کے نزدیک  مقام عظیم پر صرف سچائی اور امانتداری کی وجہ سے پہنچے،یعنی نہ رسول خدا(ص) کی نظر میں علی(ع) سے بڑا کوئی سچا تھا اور نہ کوئی علی(ع) سے بڑا امانتدار۔(الكافي، ثقة الاسلام أبي جعفر محمد بن يعقوب بن إسحاق الكليني الرازي رحمه الله، ناشر: دار الكتب الاسلامية، تهران، 1365، ج۲، ص۱۰۴)
قابل غور بات ہے کہ امام جعفر صادق (علیہ السلام) نے عبداللہ ابن ابی یعفور کو سچائی اور امانتداری کی صفات کو اپنانے کا حکم دیا ہے، لہذا ہمیں بھی یہ دو صفات اپنانی چاہئیں ،تاکہ ہمیں بھی امام وقت ،فرزند زہرا(س) دلبر حسین،امام زمانہ (عج) کے نزدیک کوئی اعتبار نصیب ہوجائے۔

الاسوہ  مرکز



آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Thursday - 2018 Sep 20