Monday - 2018 April 23
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 188652
Published : 26/7/2017 17:54

مہدویت:

امام مہدی(عج) کی جوانی ذریعہ امتحان

امام صادق علیہ السلام نے ظہورکے وقت امام مہدی علیہ السلام کی جوانی کو اللہ تعالیٰ کا ایک عظیم امتحان قراردیتے ہوئے فرمایا ہےکہ اللہ تعالیٰ کاایک عظیم امتحان یہ ہےکہ ان کا صاحب جوانی کی صورت میں ظاہرہوگا جب کہ وہ ان کے بارے میں بوڑھے ہونےکا خیال رکھتے ہوں گے۔

ولایت پورٹل:بہت سی روایات اس حقیقت پردلالت کرتی ہیں کہ جب امام زمانہ علیہ السلام ظہور فرمائیں گے تو ایسا محسوس ہوگا جیسے ابھی آپ کی عمر شریف تیس ،چالیس برس ہو،آپ پر زمانے کا کوئی اثر نہیں ہوگا،البتہ اس کا ہرگز یہ مطلب نہیں ہے کہ آپ علیہ السلام کی حقیقی عمر بھی تیس یا چالیس سال  ہی ہوگی بلکہ آپ کی شکل وصورت کو دیکھ کرایسا معلوم ہوتا ہےکہ آپ کی عمر تیس سے چالیس کے درمیان لگے گی۔(۱)
محمد بن مسلم کہتے ہیں کہ میں امام باقرعلیہ السلام کی خدمت میں پہنچا تاکہ قائم آل محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے بارے میں سوال کروں،میرے پوچھنے سے پہلے ہی آپ علیہ السلام نے فرمایا:اے محمد بن مسلم حضرت قائم علیہ السلام پانچ ابنیاء سےمشابہت رکھتے ہیں: غیبت کے لحاظ سے حضرت یوسف علیہ السلام کےساتھ، قتل کے خوف اور ولادت کےخفیہ ہونے کےلحاظ سے حضرت موسیٰ علیہ السلام کے ساتھ،ان کے زندہ ہونے کے بارے میں اختلاف کے لحاظ سے حضرت عیسی علیہ السلام کے ساتھ اورعادلانہ قیام میں اپنے جد رسول اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم سے مشابہت رکھتےہیں،لیکن حضرت یونس علیہ السلام سے ان کی مشابہت ان کی غیبت ہے کہ جو بڑھاپے کے بعد جوانی کی شکل وصورت کے ساتھ اپنی قوم کی طرف پلٹے تھے۔(۲)
حضرت امام صادق علیہ السلام ایک حدیث میں ارشاد فرماتے ہیں:ظہور کے وقت امام علیہ السلام کا جوان ہونا ایک عظیم امتحان ہے: (انه من اعظم البلیة ان یخرج الیهم صاحبهم شاباً و هم یحسبونه شیخا کبیراً) اللہ تعالیٰ کاایک عظیم امتحان یہ ہےکہ ان کا صاحب جوانی کی صورت میں ظاہرہوگا جب وہ ان کے بارے میں بوڑھے ہونے کا خیال رکھتےہوں گے۔(۳)
روایت میں ہے کہ جب حضرت قائم علیہ السلام قیام کےلئے اقدام کریں گے تو لوگ انہیں نہیں پہچانیں گے، کیونکہ وہ ایک باکمال جوان کی شکل وصورت میں ان کے سامنے  ظاہر ہونگے اورفقط وہی باایمان افراد ثابت قدم رہیں گےکہ  جنہوں نے عالم ذر میں اپنے پروردگار سے عہد وفا باندھ رکھا ہے۔(۴)
امام حسن مجتبیٰ علیہ السلام فرماتے ہیں کہ میرے بھائی حسین علیہ السلام کے نویں بیٹے ہیں کہ غیبت کے دورمیں اللہ تعالیٰ جن کی عمر طولانی کرے گا اور پھر اپنی قدرت سے انہیں چالیس سال کے جوان کی صورت میں ظاہرکرے گا تاکہ معلوم ہوجائےکہ اللہ تعالیٰ ہرچیزپرقادرہے۔(۵)
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
حوالہ جات:
1.خادمی شیرازی، یاد مهدی، ص 165  ۔
2.کمال الدین، ج 1، ص 327۔
۳.معجم احادیث الامام المهدی علیه السلام، ج 3، ص 354۔
۴غیبت نعمانی، ص 268، ب 10، ح 43؛ معجم احادیث الامام المهدی علیه السلام، ج 3، ص353 ۔
۵۔ کمال الدین، ج1، ص 29۔
نام کتاب محمد رضا نصوری کی کتاب «قرآن،مهدی و جوانان»سے اقتباس



آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Monday - 2018 April 23