Sunday - 2018 April 22
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 188737
Published : 30/7/2017 17:48

اسلام میں عبادت

اسلام کی نگاہ میں ہر وہ نیک اور مفید کام جو خدا کے لئے انجام دیا جاتا ہے اگر خاص الٰہی جذبہ کے تحت انجام دیا جائے تو عبادت ہے،لہٰذا تعلیم ،کسب معاش اور اجتماعی سرگرمی اگر سب صرف خدا کے لئے ہو تو عبادت ہے ،درحالیکہ اسلام میں نماز و روزہ کی مانند چند ایسی تعلیمات بھی ہیں جو صرف رسم عبادت کی انجام دہی کے لئے وضع کی گئی ہیں اور جس کا خود اپنا ایک خاص فلسفہ ہے۔

ولایت پورٹل:خدائے یکتا کی عبادت و پرستش اور کسی بھی دوسرے وجود کی پرستش سے انکار خدا کے پیغمبروں کی تعلیمات کے بنیادی اصول میں سے ایک ہے،کسی بھی نبی کی تعلیم عبادت سے خالی نہیں رہی ہے۔
جیساکہ ہم جانتے ہیں کہ اسلام کے مقدس آئین میں بھی عبادت تمام تعلیمات میں سرفہرست ہے،اسلام میں عبادت کا کوئی ایسا تصور جو زندگی کے امور سے الگ ،محض کسی دوسری دنیا سے تعلق رکھتا ہو نہیں پایا جاتا،اسلامی عبادتیں فلسفۂ زندگی کے ساتھ ساتھ ہیں اور متن زندگی میں واقع ہیں۔
اس سے قطع نظر کہ بعض اسلامی عبادتیں مشترکہ طور پر جماعتی و اجتماعی صورت میں انجام دی جاتی ہیں ،اسلام نے فردی عبادتیں بھی اس طرح تشکیل دی ہیں کہ اس میں زندگی کے بعض اصول اور ذمہ داریوں کی رعایت رکھی گئی ہے،مثلاً نماز جو کامل طور سے اظہار بندگی کا مظہر ہے اسلام میں ایسی مخصوص شکل میں انجام دی جاتی ہے کہ اگر کوئی فرد گوشۂ تنہائی میں اکیلے نماز پڑھنا چاہے تو بھی وہ خود بخود بعض اخلاقی و اجتماعی وظائف ،مثلاً صفائی و پاکیزگی ،دوسروں کے حقوق کا احترام ،وقت کی رعایت ،جہت ومقصد سے آگاہی ،جذبات پر قابو پانا اور اللہ کے نیک بندوں سے صلح وآشتی وغیرہ پر مجبور ہوجاتا ہے۔
اسلام کی نگاہ میں ہر وہ نیک اور مفید کام جو خدا کے لئے انجام دیا جاتا ہے اگر خاص الٰہی جذبہ کے تحت انجام دیا جائے تو عبادت ہے،لہٰذا تعلیم ،کسب معاش اور اجتماعی سرگرمی اگر سب صرف خدا کے لئے ہو تو عبادت ہے ،درحالیکہ اسلام میں نماز و روزہ کی مانند چند ایسی تعلیمات بھی ہیں جو صرف رسم عبادت کی انجام دہی کے لئے وضع کی گئی ہیں اور جس کا خود اپنا ایک خاص فلسفہ ہے۔

 


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Sunday - 2018 April 22