Saturday - 2018 Sep 22
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 189188
Published : 23/8/2017 15:44

نوید فضل و کرم ماہ ذی الحجہ

تیسرے عشرے میں 24 ذی الحجہ عید مباہلہ یعنی باطل کے مقابل حق کی جیت،تثلیث کے مقابل توحید کی فتح کے طور پر منائی جاتا ہے۔

ولایت پورٹل:ذی الحجہ ہجری کلنڈر کا آخری مہینہ ہے اس کے اختتام کے ساتھ ساتھ ہجری سال بھی تمام ہوجاتا ہے اور اس کے بعد ایک نیا سال شروع ہوتا ہے۔
یہ مہینہ حرام(حرمت والے) مہینوں میں سے ایک ہے کہ جس میں اللہ نے عبادت،زیارت،حج اور ترک جنگ و جدال کو ضروری قرار دیا ہے اور اس مہینہ کی حرمت کا تذکرہ قرآن مجید میں فرمایا ہے اور اس کی حرمت کا خیال و پاس رکھنا خصوصاً مسلمانوں پر لازم و  واجب قرار دیا ہے،چنانچہ ارشاد ہوتا ہے: انَّ عِدَةَ الشُّهورِ عند اللهِ اثنا عَشَرَ شَهراً في کِتابِ اللهِ،يومَ خَلَقَ السَّماواتِ وَ الأرضَ، مِنها اَربَعَةٌ حُرُمٌ، ذلِکَ الدينُ القَيمُ، فلا تَظلِمُوا فيهِنَّ اِن اَنفُُسَکُم.(1)   
ترجمہ:کتاب خدا میں مہینوں کی تعداد اللہ تعالٰی کے نزدیک یقیناً بارہ ہیں،جب سے اس نے آسمانوں اور زمین کو پیدا کیا ہے،ان میں سے چار مہینے حرمت کے ہیں،یہی مستحکم دین ہے،لہذا تم ان مہینوں میں اپنے اوپر ظلم نہ کرو!
حرمت والے مہینے
حرمت والے مہینے درج ذیل ہیں:ذیقعدہ،ذی الحجہ،محرم اور رجب،یہ تین مہینے یعنی ذیقعدہ،ذی الحجہ،محرم پئے در پئے اور تسلسل کے ساتھ آتے ہیں جبکہ رجب ان سے الگ ہے۔
یہ مہینہ سال کا ایک ممتاز  مہینہ ہے چونکہ اس میں بہت سی سیاسی ،عبادی اور اجتماعی و تاریخی مناسبتیں پائی جاتیں ہیں،چونکہ اس کا پہلا عشرہ  زیارت خانہ خدا اور حج بیت اللہ سے مخصوص ہے،اور اس عشرہ کا آخری دن جسے عید اضحی کے نام سے یاد کیا جاتا ہے اور اسے حضرت اسماعیل علیہ السلام کی قربانی کی یاد میں منایا جاتا ہے۔
اس کے دوسرے عشرے میں تاریخ کی ایک دوسری مناسبت اور عید، 18 ذی الحجہ ہے کہ جو عید ولایت و غدیر کے نام سے موالیان اہل بیت(ع) کے درمیان بڑی عقیدت سے منائی جاتی ہے۔
اور پھر تیسرے عشرے میں 24 ذی الحجہ عید مباہلہ یعنی باطل کے مقابل حق کی جیت،تثلیث کے مقابل توحید کی فتح کے طور پر منائی جاتا ہے۔
الغرض! اس مہینہ میں تاریخ کی بہت سی اہم مناسبتیں پائی جاتیں ہیں جن کے بیان کرنے کے لئے ایک مفصل مقالہ کی ضرورت ہے لیکن اختصار کو ملحوظ رکھتے ہوئے ہم اپنی بات کو رسول اکرم(ص) کی اس حدیث پر ختم کرتے ہیں چنانچہ ایک روایت میں آپ(ص) سے وارد ہوا ہے کہ:خداوندعالم نے ہر مجموعہ(گروہ) میں سے چار چیزوں کو منتخب  کیا ہے،اور اس کے بعد حضرت(ص) نے چند گروہ کا تذکرہ فرمایا اور پھر اپنے بیان کو جاری رکھتے ہوئے فرمایا:اللہ نے پورے سال میں سے صرف ان چار مہینوں کو منتخب کیا ہے:رجب،ذیقعدہ،ذی الحجہ،محرم۔
اسی طرح پورے سال کے دنوں میں 4 روز اللہ کا انتخاب ہیں:جمعہ،ترویہ(8 ذی الحجہ) عرفہ(9 ذی الحجہ) روز عید اضحی (10 ذی الحجہ)۔(2)
لہذا اس بنیاد پر یہ بات کہی جاسکتی ہے اس مہینہ کی قدر و منزلت اللہ کی نگاہ میں بہت عظیم و بلند ہے۔
چنانچہ مسلمانوں کو اس مہینہ میں وارد ہونے اور اس کے فیوض و برکات سے مستفید ہونے کے لئے خصوصی اہتمام کی ضرورت ہے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
حوالہ جات:
1.سوره توبه [9]، آيه36۔
2.الخصال [شيخ صدوق]، ج1، ص225 ۔



آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Saturday - 2018 Sep 22