Friday - 2018 Oct. 19
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 189268
Published : 27/8/2017 18:37

زمانہ غیبت میں دین کی حفاظت

ایسے زمانہ میں دین کو محفوظ رکھنے اور ایمان پر قائم رہنے کا سب سے بہترین طریقہ یہ ہے کہ ہم معصومین(ع) کے ہدایت بخش کلام سے تمسک کریں اور اصول و عقائد کو استدلال و برہان کے ذریعہ آئمہ معصومین(ع) سے سیکھیں اور اپنے دین کو مضبوط و مستحکم بنائیں۔


ولایت پورٹل:امام زمانہ(عج) کی غیبت کے فلسفوں میں سے ایک فلسفہ انسانوں کا امتحان ہے،چونکہ اللہ انسان کو مختلف و متعدد طریقوں سے آزماتا ہے لہذا انسان کے امتحان کا ایک اہم ذریعہ ایمان کا محفوظ رکھنا ہے۔
حضرت امام جعفر صادق(ع) ارشاد فرماتے ہیں:آخری زمانہ میں ایمان و دین کو محفوظ رکھنا ننگے ہاتھوں سے کانٹے والے درخت کی ٹہنیاں تراشنے کے مانند یا دھکتنے ہوئے انگاروں کو ہاتھوں پر اٹھانے کے مانند ہوگا۔
آخری زمانہ میں فکری و عقیدتی اختلافات اپنے اوج پر ہونگے،ہر روز نئے فرقے بنام حق مارکیٹ میں آئیں گے تاکہ کسی صورت مؤمنین کو صراط مستقیم سے منحرف کردیں،بہت سے لوگ بلکہ خود مؤمنین اور اپنے کو اہل بیت(ع) کا پیرو کہلوانے والے دنیا کی رنگین مزاجی کے اسیر ہوکر دینی اقدار کو پس پشت ڈالتے نظر آئیں گے اور دین کے حلال و حرام ان کی نظر میں حقیر ہونگے چنانچہ رسول اکرم(ص) نے ارشاد فرمایا:لوگوں پر ایک ایسا زمانہ بھی آئے گا کہ جب ان کا سارا ہم و غم شکم سیری اور شہوت کو پورا کرنا،اور دنیا کی موج مستی ہوگی،ان کا مال ہی ان کا دین ہوگا لہذا ایسے لوگوں کا اللہ کے نزدیک کوئی حیثیت و وقار نہیں ہوگی۔
لہذا ایسے زمانہ میں دین کو محفوظ رکھنے اور ایمان پر قائم رہنے کا سب سے بہترین طریقہ یہ ہے کہ ہم معصومین(ع) کے ہدایت بخش کلام سے تمسک کریں اور اصول و عقائد کو استدلال و برہان کے ذریعہ آئمہ معصومین(ع) سے سیکھیں اور اپنے دین کو مضبوط و مستحکم بنائیں۔

 


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Friday - 2018 Oct. 19