Saturday - 2018 Oct. 20
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 189284
Published : 28/8/2017 18:19

امت مسلمہ کی بے حسی کا منھ بولتا ثبوت

400 فلسطینی بچے اسرائیلی جیلوں میں ہیں، ان کو اپنے ساتھی بچوں کے ساتھ اسکول میں ہونا چاہئے تھا۔


ولایت پورٹل:فلسطینی قیدیوں کے ادارے نے کہا ہے کہ: نئے تعلیمی سال کا آغاز ہو گیا ہے لیکن سینکڑوں بچے قید ہونے کی وجہ سے تعلیم کے حصول سے محروم ہیں،اس ادارے کے ترجمان ریاض الاشقر نے کہا ہے کہ: 400 فلسطینی بچے اسرائیلی جیلوں میں ہیں، ان کو اپنے ساتھی بچوں کے ساتھ اسکول میں ہونا چاہئے تھا پر ناحق میں انہیں قید کیا گیا ہے،انہوں نے مزید کہا کہ: کچھ بچے گھروں میں نظر بند ہونے کی وجہ سے اسکول نہیں جاسکتے ہیں، اور اپنے تعلیمی حق سے محروم ہیں، جس سے ان کا مستقبل خطرے میں پڑ جائے گا،الاشقر نے کہا: یہ نظر بندی اس وجہ سے ہے کہ فلسطینی اپنے بچوں کی رہائی کے بدلے وعدہ کرتے ہیں کہ ان کے بچے گھر سے نہیں نکلیں گے، اور نہ اسکول جائیں گے،اور اب ان کے گھر ہی ان کے لیے زندان بن گئے ہیں،انہوں نے کہا: بیت المقدس میں رہنے والے بچوں کو یہی سزا زیادہ دی جاتی ہے، اس وجہ سے ان پر برے اثرات پڑتے ہیں، کیونکہ وہ اپنے دوستوں کو سکول جاتے ہوئے اور کھیلتے ہوئے دیکھتے ہیں، جس کی وجہ سے وہ غصہ ہو کر اپنے گھر والوں سے لڑائی کرتے ہیں کیونکہ وہ اپنے والدین کو اس محرومی کا ذمہ دار قرار دیتے ہیں۔
Iuvmpress





آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Saturday - 2018 Oct. 20