Friday - 2018 August 17
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 189325
Published : 30/8/2017 16:26

اگر امامین صادقین(ع)کی زحمات نہ ہوتیں تو تاریخ مسلمانوں کو ٹھنڈے بستہ میں ڈال دیتی:استاد میر باقری

لہذا ایسے حالات میں امام محمد باقر اور امام جعفر صادق علیہما السلام نے مسلمانوں کے درمیان اہل بیت (ع) کی علمی مرجعیت کا احیاء کیا اور صرف شیعوں کو ہی نہیں اہل سنت کو بھی منحرف افکار و رسوم کے چنگل میں گرفتار ہونے سے نجات دی چونکہ اس زمانے میں شکوک و شبھات کا وہ طوفان اسلامی معاشرے کی طرف رخ کئے ہوئے تھا کہ اگر ان کا سدباب نہ کیا جاتا تو اسلام اور مسلمانوں کو تاریخ فراموشی کے بستے میں ڈال دیتی۔


ولایت پورٹل:حضرت امام محمد باقر اور امام جعفر صادق(ع) نے صرف شیعوں کو ہی فکری طور پر مہمیز نہیں کیا بلکہ اہل سنت کو بھی انحراف کے خطرناک گڈھے میں گرنے سے نجات دی،ان دو بزرگواروں نے اسلامی معاشرہ میں امام معصوم کی علمی مرجعیت کا احیاء کیا اور فقہ اسلامی کے تمام تر سابق موازنوں کو تبدیل کردیا۔
امام باقر و امام جعفر صادق(ع) سے پہلے دور دراز علاقوں میں رہنے والے شیعہ بھی اور وہ افراد جن کی امام معصوم تک رسائی نہیں ہوسکتی تھی وہ اپنے بعض مسائل میں اہل سنت کی طرف رجوع کرتے تھے،لیکن اہل بیت(ع) کی علمی مرجعیت کا احیاء ہونا اس امر کا سبب بنا کہ خود اہل سنت کے چاروں امام، امام جعفر صادق(ع) کے سامنے زانوئے ادب تہہ کرنے کے لئے آئے۔
اگر اہل سنت کی فقہ کے بارے میں تحقیق کریں تو ہمیں معلوم ہوگا کہ امام جعفر صادق(ع) سے پہلے اس کا کیا حال تھا اور امام کے بعد اس میں کیا تبدیلیاں اور گہرائی رونما ہوئیں،اہل سنت کے یہاں کلام و عرفان کتنا پختہ ہوا ۔لہذا ہمیں پتہ چل جائے گا ان دو اماموں نے کس طرح کام کیا تاکہ عالم اسلام مستقبل میں درپیش علمی انحرافات سے محفوظ رہ سکے۔
اس کام کے لئے کسی بڑی کدو کاوش کی بھی ضرورت نہیں  بلکہ شیخ صدوق کی کتاب توحید میں موجود ان سوالات و شبہات کو دیکھ لیا جائے جو توحید اور معرفت خدا کے متعلق ان حضرات سے کئے گئے تو آپ کو معلوم ہوجائے گا کہ اس دور میں مسلمان اس درجہ انحطاط فکری کا شکار ہوگئے تھے کہ خدا کے متعلق یہود و نصاریٰ سے بھی برا عقیدہ رکھتے تھے۔
مسلمانوں کا یہ فکری انحطاط کوئی اتفاق نہیں تھا بلکہ صدر اسلام سے منافقین کی وہ سوچی سمجھی سازش تھی جس کے سبب وہ ہمیشہ اصلی اسلام کے مدمقابل رہے،چنانچہ اس سازش کے تحت نہ جانے کتنے جعلی اور انحرافی فرقے بنائے گئے،نہ جانے کتنی بدعتوں کو ایجاد کیا گیا،دوسری اقوام کے اخبار و افسانوں کو اسلام میں جگہ دی گئی  اور منافقین کی یہ سازش اس وجہ سے تھی تاکہ اسلام کی معنویت کے پرچم کو سرنگوں کردیا جائے۔
لہذا ایسے حالات میں امام محمد باقر اور امام جعفر صادق علیہما السلام  نے مسلمانوں کے درمیان اہل بیت (ع) کی علمی مرجعیت کا احیاء کیا اور صرف شیعوں کو ہی نہیں اہل سنت کو بھی منحرف افکار و رسوم کے چنگل میں گرفتار ہونے سے نجات دی چونکہ اس زمانے میں شکوک و شبھات کا وہ طوفان اسلامی معاشرے کی طرف رخ کئے ہوئے تھا کہ اگر ان کا سدباب نہ کیا جاتا تو اسلام اور مسلمانوں کو تاریخ فراموشی کے بستے میں ڈال دیتی۔

ترجمہ:سجاد ربانی



آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Friday - 2018 August 17