Friday - 2019 January 18
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 189394
Published : 4/9/2017 7:34

بربریت کی حدوں کو تجاوز کرتی میانمار کی فوج،مسلم خواتین اور بچوں کے سر قلم

انسانی حقوق کی تنظیم فورٹی فائیو رائٹس نے بھی اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ میانمار کے فوجیوں نے بڑی تعداد میں روہنگیا عورتوں کو گرفتار کرکے بانس کے بنیں جھوپڑے میں بند کردیا اور پھرجھوپڑے کو قیدیوں سمیت جلا دیا۔

ولایت پورٹل:رپورٹ کے مطابق میانمار میں بچوں کے سر قلم کئے جانے اور عام لوگوں کو زندہ نذرآتش کئے جانے کے واقعات میں ہرروز اضافہ ہوتا جارہا ہے۔
عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ میانمار کے فوجی، بچوں کے سرکاٹ رہے ہیں اور بےگناہ لوگوں کو زندہ ہی جلا رہے ہیں، ادھرمیانمار کے فوجیوں نے صوبہ راخین کے ایک دیہات میں تقریبا دو سو مردوں، عورتوں اور بچوں کا قتل عام کیا ہے۔
انسانی حقوق کی تنظیم فورٹی فائیو رائٹس نے بھی اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ میانمار کے فوجیوں نے بڑی تعداد میں روہنگیا عورتوں کو گرفتار کرکے بانس کے بنیں جھوپڑے میں بند کردیا اور پھرجھوپڑے کو قیدیوں سمیت جلا دیا۔
پچیس اگست سے اب تک صوبہ راخین میں روہنگیا مسلمانوں کے خلاف میانمار کی فوج اور انتہاپسند بودھسٹوں کے حملوں میں چار سو سے زیادہ افراد جاں بحق ہوچکے ہیں۔




آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Friday - 2019 January 18