Friday - 2019 January 18
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 189405
Published : 4/9/2017 15:49

داعش دنیا بھر کے دہشتگردوں کا مرکز

شمالی تلعفر میں کرد پیشمرگہ فورس کے سامنے تسلیم ہونے والے داعشیوں کودیکھ کر معلوم ہوتا ہے کہ اس تنظیم میں دنیا بھر کےدہشتگرد اکٹھے ہوئے ہیں۔

ولایت پورٹل:شمالی تلعفر میں کرد پیشمرگہ فورس کے سامنے تسلیم ہونے والے داعشیوں میں کوئی اپنے کو تاجکستانی تو کوئی  آذربایجانی،کوئی ترکی کا اور کوئی روسی بتاتا ہے  نیز کچھ نے عراقی ، ایک دو نے شامی اور ایک نےاپنے آپ کو لبنان کا  باشندہ   بتایا ہے ، بات یہیں پر ختم نہیں ہوتی بلکہ الحشد الشعبی نے تلعفر کی آزادی کے ایک دن بعد اعلان کیا تھا کہ اس شہر کی دیواروں پر دنیا کی تمام رائج بڑی زبانوں میں نعرے لکھے ہوئے تھے ، جن میں انگریزی،عربی،روسی،کردی،ترکی  اورچینی شامل ہیں، جیسا کہ عراقی وزیر اعظم حیدر العبادی اور وزیر خارجہ ابراہیم الجعفری نے مخلتف موقعوں پر کہا ہے کہ ایک سو بیس سے زیادہ ملکوں کے دہشتگرد داعش میں شامل ہیں  جن میں امریکہ،کنیڈااور آسٹریلیا سے لے کر کئی ایک یورپی ممالک بھی شامل ہیں ، یہاں پر سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ ایک نہایت ہی خطرناک دہشتگرد تنظیم داعش نے تین سال کے مختصر عرصہ میں  اتنے ممالک سے دہشتگرد کیسے جمع کر لیے ؟ کہیں ایسا تو نہیں  ان کی حامی حکومتوں اور خفیہ اداروں  کی  باقاعدہ منصوبہ بندی کے ساتھ ایسا ہوا ہے ؟، ادھر  امریکہ داعشیوں کو شام میں ایک جگہ جمع نہیں ہونے دیتا جس  سے ان کے پیچھے بین الاقوامی دہشتگردوں کا ہاتھ صاف ظاہر ہوجاتا ہے ۔
ایرنا




آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Friday - 2019 January 18