Friday - 2019 January 18
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 189434
Published : 5/9/2017 15:57

تاریخ اسلام کا ایک ورق:

معجزہ شق القمر

ابھی پیغمبر اکرم(ص) ان کی اس درخواست کے بارے میں سوچ ہی رہے تھے کہ جبرئیل امین نازل ہوئے اور عرض کیا:یا محمد!اللہ آپ کو سلام کہتا ہے اور اس نے فرمایا:میں نے اس وقت کائنات کی ہر چیز کا اختیار آپ کے دست رحمت میں ہے آپ مجھ سے جو کچھ چاہیں طلب کرسکتے ہیں،اسی وقت حضرت(ص) نے اپنے سر اقدس کو آسمان کی طرف بلند کیا اور چاند کو دو ٹکڑے ہونے کا حکم دیا؛اسی وقت چاند دو ٹکڑوں میں تقسیم ہوگیا۔

ولایت پورٹل:یہ شب ۱۴ ذی الحجہ سن ۶ بعثت کی بات ہے کہ جب مہتاب اپنی پوری تاب و ضیاء کے ساتھ آسمان دنیا کو منور کئے تھا تو کچھ مکہ کے جاہل مشرک یا ایک روایت کی بناء پر اہل یثرب کا ۱۴ لوگوں پر مشتمل چھوٹا سا قافلہ جستجوئے ہدایت میں مکہ معظمہ کی وادی منی  پیغمبر اکرم(ص) کے دست رحمت پناہ پر پوشیدہ طور سے بیعت کرتا ہے اور حضرت سے یہ التماس کی جاتی ہے کہ:یا رسول اللہ(ص) خداوندعالم نے ہر نبی کو کوئی نہ کوئی معجزہ دیکر بھیجا ہے اور آپ تو افضل الانبیاء ہیں یقیناً آپ کے پاس بھی بہت سے معجزے ہونگے،یا رسول اللہ(ص) آج کی اس نورانی شب میں آپ ہمیں اپنا کون سا معجزہ دکھائیں گے؟
حضرت رسالتمآب(ص) نے ارشاد فرمایا:آپ لوگ مجھ سے کون سا معجزہ دیکھنا چاہیں گے؛انھوں نے جواب دیا:اگر خدا آپ کے ساتھ ہے اور آپ اس کے یہاں صاحب منصب و عظمت ہیں تو اللہ سے یہ دعا کریں کہ چاند کی ٹکیا دو حصوں میں تقسیم ہوکر ایک دوسرے سے جدا ہوجائے۔
ابھی پیغمبر اکرم(ص) ان کی اس درخواست کے بارے میں سوچ ہی رہے تھے کہ جبرئیل امین نازل ہوئے اور عرض کیا:یا محمد!اللہ آپ کو سلام کہتا ہے  اور اس نے فرمایا:میں نے اس وقت کائنات کی ہر چیز کا اختیار آپ کے دست رحمت میں ہے آپ مجھ سے جو کچھ چاہیں طلب کرسکتے ہیں،اسی وقت حضرت(ص) نے اپنے سر اقدس کو آسمان کی طرف بلند کیا اور چاند کو دو ٹکڑے ہونے کا حکم دیا؛اسی وقت چاند دو ٹکڑوں میں تقسیم ہوگیا۔
جیسا کہ بعض روایات سے معلوم ہوتا ہے کہ اس معجزہ کے اظہار کا وقت ۱۴ ذی الحجہ کی ابتدائی شب ،سن ۶ بعثت یعنی ہجرت سے ۵ برس پہلے یہ معجزہ رونما ہوا۔




آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Friday - 2019 January 18