Wed - 2018 August 15
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 190573
Published : 23/11/2017 13:47

یمن میں مزید قتل و کشتار کے لئے:

سعودی عرب نے خریدے امریکہ سے 7 ارب ڈالر کے جدید ہتھیار

مزے کی بات یہ ہے کہ سب ہتھیار ایک مسلمان ملک مسلمانوں پر برسانے کے لئے عیسائیوں اور یہودیوں سے خرید رہا ہے،جس کا مطلب یہ ہے کہ یمن جنگ بھی صلیبی جنگ کا ہی تسلسل ہے فرق صرف اتنا ہے کہ آج صلیب کا پرچم آل سعود کے ہاتھ میں ہے۔


ولایت پورٹل:رپورٹ کے مطابق سعودی عرب اب یمن جنگ  کے لئے امریکہ سے نئی ٹیکنک سے بنے وہ ہتھیار خرید رہا ہے کہ جو دور ہی سے اپنے ھدف کو صحیح نشانہ بنانے کی قابلیت رکھتے ہوں،چنانچہ معتبر ذرائع کے مطابق یہ معاملہ 7 ارب ڈالر کے ہتھیاروں کا ہے جسے امریکی دفاعی کمپنیز ہری جھنڑی دکھا چکی ہے۔
اگرچہ امریکی سنیٹ میں موجود کچھ قانون داں لوگ اس ڈیل کی مخالفت کرسکتے ہیں چونکہ ان کی نظر میں یمن کے عام لوگوں کو نشانہ بنانے کے لئے امریکی ہتھیاروں کا استعمال نہیں ہونا چاہیئے۔
یاد رہے کہ 2015 سے اب تک سعودی عرب اپنے اتحاد کے ساتھ یمن کے مظلوم عوام پر بم برسا رہا ہے اور یہ سب ہتھیار،ٹینک،میزائیل،یہاں تک کہ ممنوعہ کلسٹر بم بھی گرا چکا ہے ،اور مزے کی بات یہ ہے کہ سب ہتھیار ایک مسلمان ملک مسلمانوں پر برسانے کے لئے عیسائیوں اور یہودیوں سے خرید رہا ہے،جس کا مطلب یہ ہے کہ یمن جنگ بھی صلیبی جنگ کا ہی تسلسل ہے فرق صرف اتنا ہے کہ آج صلیب کا پرچم آل سعود کے ہاتھ میں ہے۔

العالم



آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Wed - 2018 August 15