Monday - 2018 Oct. 15
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 190703
Published : 3/12/2017 10:14

روہنگیا مسلمانوں کی حالت دیکھ کیتھولک پاپ بھی نہیں روک پائے اپنے آنسو

پاپ نے مہاجرین کے لئے بنگلادیشی حکومت کے انتظامات کو سرہاتے ہوئے کہا کہ:بنگلادیشی حکومت نے روہنگیا مہاجرین کے لئے نہایت عمدہ سہولیات میسر کی ہے کہ جو میری نظر میں فوق العادہ ہیں ساتھ ہی انھوں نے کہا کہ جب میں روہنگیا کے مہاجرین سے ملا تو میری آنکھوں سے بے ساختہ آنسو جاری ہوگئے میں نے لاکھ چھپانا چاہا لیکن چھپانہ سکا اور میرے ساتھ ساتھ وہ بھی رونے لگے۔


ولایت پورٹل:رپورٹ کے مطابق کیتھولیک مذہبی رہنما پاپ فرانسیس کل اپنے ایشیاء کے دورے سے روم واپس گئے ہیں جب کچھ اخبار رپورٹرس نے ان سے اس دورے کے متعلق سوالات کئے تو انھوں نے بنگلادیش میں آورگی کی زندگی گذار رہے روہنگیا مسلمانوں پر میانمار حکومت کے ظلم کی داستان ہی دوہرا دی۔
کیتھولک مذہبی رہنما کا روہنگیا مسلمانوں سے ڈھاکہ میں ملاقات کرنے اور ان کی درد بھری داستان سننے کو پاپ کی اعلٰی اور انسانی شخصیت کے طور پر دیکھا جارہا ہے۔
پاپ فرانسیس نے اظہار کیا کہ مجھے یہ تو معلوم تھا کہ میری ملاقات روہنگیا کے ستمدیدہ مسلمانوں سے ضرور ہوگی لیکن میں یہ نہیں جانتا تھا کہ یہ ملاقات کب اور کہاں ہوگی اور ان سے ملاقات کرنا میرے سفر کی ایک غرض تھی۔
یاد رہے کہ کیتھولک رہنما اپنی صراحت گوئی میں مشہور ہیں لیکن جب ان کی ملاقات میانمار کے اعلٰی حکام سے ہوئی تو انھوں نے روہنگیا کا لفظ پر زبان پر لانے سے اجتناب کیا لیکن جیسے ہی وہ بنگلادیش پہونچے انھوں نے روہنگیا موضوع پر کافی دلچسپی ظاہر کی اور شہر ڈھاکہ کے جنوب میں روہنگیا کے مہاجر کیمپ کا دورہ کر ان سے ملاقات بھی کی۔
پاپ نے اپنی بات جاری رکھتے ہوئے کہا کہ بنگلادیشی حکومت نے روہنگیا مہاجرین کے لئے نہایت عمدہ سہولیات میسر کی ہے کہ جو میری نظر میں فوق العادہ ہیں ساتھ ہی انھوں نے کہا کہ جب میں روہنگیا کے مہاجرین سے ملا تو میری آنکھوں سے بے ساختہ آنسو جاری ہوگئے میں نے لاکھ چھپانا چاہا لیکن چھپانہ سکا اور میرے ساتھ ساتھ وہ بھی رونے لگے۔
یاد رہے کہ ۸ برس سے روھنگیا مسلمانوں پر میانمار کے شدت پسند بدھسٹوں کی ظلم کا نشانہ بنے ہوئے ہیں جن میں تقریباً ۶ لاکھ لوگ بنگلادیش پناہ کی تلاش میں مارے مارے پھر رہے ہیں۔

العالم


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Monday - 2018 Oct. 15