Wed - 2018 August 15
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 190711
Published : 3/12/2017 18:26

حشد الشعبی نہ ہوتی تو پیرس پر داعش کا جھنڈا لہرا رہا ہوتا

عراقی پارلیمنٹ کے رکن ہمام حمودی نے فرانسوی صدر کی طرف سے حشد الشعبی کے خاتکہ کے سلسلہ میں دیے گئے بیان پر رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر حشد الشعبی نہ ہوتی تو اس وقت پیرس پر داعش کی حکومت ہوتی۔


ولایت پورٹل: حال ہی میں  فرانس کے صدر ایمائل ماکرون نے  حشد الشعبی کو ختم کرنے کا مطالبہ کیا تھا جس پر عراقی پارلیمنٹ کے رکن ہمام حمودی نے  شدید رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے  کہ فرانسوی  صدر کا یہ بیان  عراق  کے اندرونی معاملات  میں کھلی مداخلت ہے  جس کو ہماری عوام کسی بھی صورت میں  برداشت نہیں کر سکتی، حمودی نے مزید کہا کہ بہتر ہوگا  فرانس حشد الشعبی کی  فدا کاریوں کا احترام کرے  کیونکہ اگر یہ تنظیم نہ ہوتی تو  آج پیرس پر داعش کا قبضہ ہو چکا ہوتا، عراقی عوام  کو عالمی برداری خاص طور پر فرانس سے  توقع ہے کہ  پوری دنیا کی نیابت میں بہنے والے ہمارے جوانوں کے پاک خون کا سراہنا کریں ، عراقی پارلمنٹ  رکن نے مزید کہا  کہ مجھے افسوس ہے کہ فرانس کے صدر نے  سیاسی اور سفارتی اصولوں کو بالاے طاق رکھ  کر ایسا بیان دیا ہے  حتی کی انھوں نے اپنے ملک کے  آئین کو بھی پیروں تلے  روندھ دیا اور مجھے تعجب ہوتا ہے جب فرانس کے صدر دیگر ممالک کے عہدہ داروں کو اس وجہ سے تنقید کا نشانہ بناتے ہیں کہ وہ ان کے ملکی مسائل میں مداخلت کررہے ہیں جبکہ وہ خود یہی کام کرتے ہیں ۔
قدس آنلائن




آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Wed - 2018 August 15