Wed - 2018 Oct. 17
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 190727
Published : 4/12/2017 18:0

رہبر انقلاب کی نظر میں روز بعثت کے موقع پر فلسطینوں کے تئیں ہماری ذمہ داری

افسوس کے ساتھ کہنا پڑرہا ہے کہ اس سال کی عید بعثت مظلوم فلسطینیوں کے خون سے رنگین ہے،فلسطین کا حادثہ بہت بڑا حادثہ ہے،دنیائے اسلام نصف صدی سے زیادہ عرصہ سے اس حادثہ کی زد پر ہے،ان دسیوں برسوں میں ایسے مواقع بھی آئے ہیں کہ اگر دنیائے اسلام کے اہلکار اور ذمہ دار افراد کوئی قدم اٹھاتے تو شاید یہ مشکل ختم ہوجاتی یا کم از کم اس کا ختم کرنا آسان ہو جاتا۔


ولایت پورٹل:یوم بعثت امت اسلام کے لئے عید کا دن ہے۔ لیکن افسوس کے ساتھ کہنا پڑرہا ہے کہ اس سال کی عید بعثت مظلوم فلسطینیوں کے خون سے رنگین ہے،فلسطین کا حادثہ بہت بڑا حادثہ ہے،دنیائے اسلام نصف صدی سے زیادہ عرصہ سے اس حادثہ کی زد پر ہے،ان دسیوں برسوں میں ایسے مواقع بھی آئے ہیں کہ اگر دنیائے اسلام کے اہلکار اور ذمہ دار افراد کوئی قدم اٹھاتے تو شاید یہ مشکل ختم ہوجاتی یا کم از کم اس کا ختم کرنا آسان ہو جاتا،اس مدت میں کوتاہیاں تو بہت سرزد ہوئیں لیکن آج فیصلہ کی گھڑی آپہنچی ہے، آج دنیائے اسلام کے تقاضے کے مطابق فلسطینی قوم کے مقدر کو ایک جہت اور سمت مل سکتی ہے۔(آپ غور کرکے بتائیں،ایسا ہے کہ نہیں؟) کیوں کہ آج فلسطین میں ایک ایسی نسل پیدا ہوگئی ہےجس کے ذریعے ایک پارٹی کو شکست دی جاسکتی ہے،ایک گروہ کو میدان سے بھگا یاجاسکتا ہے،اپنی شجاعت اور مجاہدت سے کچھ افراد کو پشیمان کیاجاسکتا ہے،ایسے حالات سے روبرو ہونے اور مسئلہ کو پہچان لینے والی ایک نسل کو اس کے راستہ سے ہٹانا مشکل ہے،مسئلۂ فلسطین کا بار اپنے کاندھے پر اٹھانے والی نسل آج بیدار ہوچکی ہے اور وہ حقیقت کو پہچان چکی ہے۔

 


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Wed - 2018 Oct. 17