Sunday - 2018 April 22
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 191009
Published : 20/12/2017 8:43

بیس فیصد خسارہ کے ساتھ سعودی عرب میں 2018ء کا بجٹ پیش؛52ارب ڈالر بے گناہ مسلمانوں کے قتل عام سے مخصوص

سعودی عرب کے بادشاہ سلمان نے 2018ء کا بجٹ پیش کرتے ہوئے اس کو سعودی عرب کی تاریخ کا سب سے بڑا بجٹ کہاہے جس میں بیس فیصد خسارہ ہے۔

ولایت پورٹل: سعودی عرب کے سرکاری نیوز چینل کی رپورٹ کے مطابق ملک سلمان نے 2018ء کا بجٹ پیش کیا ہے اور کہا ہے ہمارے ملک  کی تاریخ کا یہ سب سے بڑا بجٹ ہے  اس کے علاوہ اس میں  تیل  کی پچاس فیصد آمدنی کو نہیں رکھا گیا ہے، انھوں نے مزید کہا کہ Outlook 2030 کو عملی جامہ پہنانے کے لیے بارہ تجویزات منظور کی گئی ہیں قابل ذکرہے کہ سعودی اخبار عکاظ نے لکھا ہے کہ ہمارے ملک کی کل  آمدنی 208ارب ڈالر ہے جبکہ خرچ 260ارب ڈالر ہے جس کی بنا پر اس سال کے بجٹ میں 52 ارب ڈالر کا خسارہ ہے نیز ا س میں سے  56 ارب ڈالر  فوجی مشن سے مخصوص ہیں جس میں  اسلحہ کی خریداری اور فوج کی حمایت شامل ہے۔
فارس




آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Sunday - 2018 April 22