Thursday - 2018 August 16
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 191600
Published : 18/1/2018 5:26

یمنی بچوں کو وبائی امراض کا شدید خطرہ:علمی ادارہ صحت کا انتباہ

عالمی ادارہ صحت نے یمن میں ڈیفتھیریا کا مرض پھیلنے پر سخت خبردار کیا ہے۔


ولایت پورٹل:ڈیفتھیریا ایک مہلک اور وبائی مرض ہے جس کے نتیجے میں انسان   کے پھیپھڑے متاثر ہو جاتے ہیں اور پھر کھانسی، بخار، گلے میں خراش ہوجاتی ہے اور بڑھتے بڑھتے گردوں اور دل کے امراض پیدا اور ہاتھ پیر مفلوج ہو جاتے ہیں،عالمی ادارہ صحت کے مطابق یمن میں اب تک سات سو زائد افراد اس مرض میں مبتلا ہو چکے ہیں،عالمی ادار صحت نے اس سے قبل بھی اس مرض کے پھیلنے کے بارے میں انتباہ دیا تھا،اقوام متحدہ کے بچوں کے ادارے یونیسف نے بھی اعلان کیا ہے کہ مارچ دو ہزار پندرہ سے یمن پر شروع ہونے والی سعودی جارحیت میں تقریبا پانچ ہزار بچے جاں بحق و زخمی ہو چکے ہیں،یونیسف کی رپورٹ میں منگل کے روز اعلان کیا گیا ہے کہ یمن میں اٹھارہ لاکھ بچے غذائی قلت کا شکار ہیں اور چار ہزار بچے ایسے ہیں جن کو فوری طور پر علاج و معالجے کی ضرورت ہے،اس رپورٹ کے مطابق نصف سے زائد یمنی بچوں کو طبی امداد اور پینے کا صاف پانی تک میسر نہیں ہے ،وہ غربت ،افلاس، بیماری ، دربدری اور غذائی قلت کا شکار ہیں جبکہ ستّر فیصد سے زائد یمنی بچے انتہائی غربت میں زندگی بسر کر رہے ہیں اور ایک کروڑ دس لاکھ سے زائد یمنی بچوں کو فوری طور پر انسان دوستانہ امداد کی ضرورت ہے،یمنی اسکولوں کے بارے میں رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ستمبر دو ہزار سترہ تک یمن میں دو سو چھپن اسکول مکمل طور پر تباہ ہو چکے ہیں جبکہ ڈیڑھ سو اسکولوں میں جنگی پناہ گزین رہائش پذیر ہیں ،یمن پر سعودی جارحیت میں اس ملک کی بنیادی تنصیبات بھی تباہ ہوگئی ہیں اور یمن کے محاصرے اور غذائی اشیا نیز دواؤں کی قلت اور اسی طرح وبائی امراض میں مبتلا ہو کے اب تک بائیس سو سے زائد افراد اپنی جانوں سے ہاتھ دھو چکے ہیں۔
سحر




آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Thursday - 2018 August 16