Sunday - 2018 Dec 16
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 191698
Published : 23/1/2018 19:53

عفرین آپریشن حلب کو دوبارہ ہتھیانے کی ترکی سازش ہے: شامی رکن پارلیمنٹ

شام کے پارلیمنٹ رکن فارس شھبانی نے اس پوری داستان سے پردہ اٹھاتے ہوئے کہا ہے کہ عفرین کا آپریشن در واقع ان کی بدنیتی کو ظاہر کرتا ہے اور وہ دوبارہ حلب کو شام کے شہریوں سے چھننا چاہتا ہے۔

ولایت پورٹل: شام اور ترکی کے درمیان ایک عرصہ تک چلنے والی لفظی جنگ اور دھمکیاں اس وقت نئی صورتحال میں تبدیل ہوگئی جب ترکی نے عفرین کے علاقہ کا کنٹرول اپنے ہاتھ میں لینے کے لئے باقاعدہ طور پر اپنی افواج شام میں اتار دیں۔
عفرین میں ہونے والے «شاخ زیتون» نامی اس آپریشن سے ترکی حکمراں جماعت کے بیانات کے مطابق دو مقاصد بتائے گئے ہیں:
۱۔عام کردوں کا دہشتگردوں سے تحفظ ۔
۲۔ترکی میں موجود ۳۵ لاکھ مہاجرین کی گھر واپسی۔
ظاہر ہے کہ مہاجرین کے تئیں اظہار ہمدردی ترکی حکمرانوں کی سیاست میں داخل نہیں ہے یہ تو صرف حلب پر اپنا قبضہ جمانے کی ترکی سازش کا ایک حصہ معلوم ہوتے ہیں۔
شام کی پارلیمنٹ کے رکن فارس شھبانی نے اس پوری داستان سے پردہ اٹھاتے ہوئے کہا ہے کہ عفرین کا آپریشن در واقع ان کی بدنیتی کو ظاہر کرتا ہے اور وہ دوبارہ حلب کو شام کے شہریوں سے چھننا چاہتا ہے۔
انہوں نے کردوں کے تئیں امریکہ کی ہمدردی کی وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ کردوں کو یہ جان لینا چاہیئے کہ وہ خطہ میں فساد برپا کرنے کے لئے ان کا استعمال کررہا ہے اور جب ان کی ضرورت ختم ہوجائے گی وہ انھیں کوڈے دان میں پھینک دے گا۔

 



آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Sunday - 2018 Dec 16