Tuesday - 2018 April 24
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 193041
Published : 10/4/2018 4:53

یمن پرآل سعود کی جارحیت؛ایک ہی خاندان کے13 افراد شہید

سعودی عرب کے کرایے کے فوجی لڑاکا طیاروں نے صوبہ تعز کے علاقے'' خدیر'' میں رہائشی مکانات پر بمباری کی ہے جس کے نتیجے میں خواتین اوربچوں سمیت ایک ہی خاندان کے 13 افراد شہید ہوگئے۔
ولایت پورٹل: سباء نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق آل سعود کی اتحادی افواج کے لڑاکا طیاروں نے صوبہ تعز میں وحشیانہ بمباری کرکے ایک درجن سے زائد یمنی نہتے مسلمانوں کو شہید کردیا ہے،تفصیلات کے مطابق سعودی عرب کے کرایے کے فوجی لڑاکا طیاروں نے صوبہ تعز کے علاقے'' خدیر'' میں رہائشی مکانات پر بمباری کی ہے جس کے نتیجے میں خواتین اوربچوں سمیت ایک ہی خاندان کے 13 افراد جام شہادت نوش کرگئے ہیں،اس سے کچھ ہی دیر پہلے سعودی اتحادی فوج کے جنگی جہازوں نے المحول نامی علاقے پر بھی شدید بمباری کی جس میں ایک عام شہری شہید اور 4 زخمی ہوگئے ،انسانی حقوق کے لیے کام کرنے والی عالمی تنظیم ہیومن رائٹس واچ کی جانب سے کہا گیا ہے کہ سعودی عرب یمن میں فضائی حملے کے دوران کلسٹر بموں کا استعمال کر رہا ہے،یاد رہے کہ سعودی عرب نے اس سے قبل بھی کئی مرتبہ نہتے یمنی مسلمانوں پر بے دریغ ممنوعہ ہتھیاروں کا استعمال کیا ہے،کلسٹر بموں میں شامل دھماکہ خیز مواد کے حامل اجزا، ایک بڑے علاقے میں پھیل جاتے ہیں اور اکثر اوقات وہ پھٹ نہیں پاتے جو پھر بعد میں بارودی سرنگ میں تبدیل ہو جاتے ہیں جو جنگ کے بعد بھی عام شہریوں کے لئے جان لیوا ثابت ہوتے ہیں۔
تسنیم





آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Tuesday - 2018 April 24