Tuesday - 2018 August 14
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 193977
Published : 27/5/2018 13:23

یورپ عمل کے ذریعہ ایٹمی معاہدہ کی پابندی کا ثبوت دے؛صرف ۳ دن میں بند پڑے پلانٹس کا ہوسکتے ہے آغاز

ابھی چند دن پہلے رہبر انقلاب نے اسلامی جمہورریہ ایران کے اعلٰی عہدیداروں سے خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ اگر یورپ والوں نے ہمارے مطالبات تسلیم نہ کئے تو ہم اپنا پر امن ایٹمی پلانٹ دوبار فعال کرسکتے ہیں۔

ولایت پورٹل: ایرانی ایٹمی ادارے کے نائب سربراہ اور ترجمان بہروز کمالوندی نے رہبر انقلاب کی آواز پر لبیک کہتے ہوئے یہ اعلان کیا ہے کہ اگر یورپ نے بھی ایٹمی معاہدہ کو قبول نہ کیا تو ہم اپنے یورینیم پروگرام کو دوبارہ ۲۰ فیصد تک پہونچانے کے لئے پوری طرح تیار ہیں اور اسکے لئے ہماری ایٹمی سائنسدانوں سمیت تمام عہدہداروں سے گفتگو ہوچکی ہے۔
جیسا کہ ابھی چند دن پہلے رہبر انقلاب نے اسلامی جمہورریہ ایران کے اعلٰی عہدیداروں سے خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ اگر یورپ والوں نے ہمارے مطالبات تسلیم نہ کئے تو ہم اپنا پر امن ایٹمی پلانٹ دوبار فعال کرسکتے ہیں۔
رہبر انقلاب نےاس خطاب میں یورپین ممالک کے حکام کو آگاہ کیا تھا کہ اگر امریکہ ایران کے تیل فروخت کرنے میں خلل ایجاد کرسکتا ہے تو یوروپ کو اتنی مقدار میں ہم سے تیل خریدنا ہوگا جتنی ہماری ضرورت ہے،نیز یورپ کے بینکوں کو ایرانی حکومت کے ساتھ لین دین کا آغاز کرنا ہوگا ورنہ ہمارے تمام حقوق محفوظ ہیں اور ہم اپنے پر امن ایٹمی پلانٹ کو شروع کرسکتے ہیں۔

 


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Tuesday - 2018 August 14