Tuesday - 2018 Sep 25
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 194042
Published : 30/5/2018 13:14

امام حسن(ع) کے دور میں مخالف گروہ کی ریشہ دوانیاں اپنے عروج پر تھیں: رہبر انقلاب

مخالف گروہ امام حسن مجتبیٰؑ کے زمانہ میں اپنی طاقت و قدرت کے اوج پر تھا۔ یہ وہی گروہ تھا جو معاویہ بن ابی سفیان کی شکل میں امام حسن(ع) مجتبیٰ کے مقابلہ میں ظاہر ہوا، اس نے جنگ شروع کی اور اسلامی حکومت کا راستہ (اسلام بہ شکل حکومت) بند کردیا اور اس حد تک مشکلیں کھڑی کردیں کہ اسلامی حکومت کی راہ میں عملی طور پر رکاوٹ بن گیا۔

ولایت پورٹل: امام حسن(ع) کے زمانہ میں مخالف گروہ نے اتنی ترقی کی کہ وہ ایک رکاوٹ و مانع کی صورت میں ظاہر ہوا۔ البتہ یہ مخالف دھڑا امام حسن(ع) کے زمانہ میں وجود پذیر نہیں ہوا تھا بلکہ اس سے بہت پہلے وجود میں آچکا تھا۔ اگر کوئی شخص مذہبی تعصبات سے بلند ہوکر صرف تاریخی شواہد و ثبوت کے لحاظ سے گفتگو کرے تو شاید وہ یہ دعویٰ کرسکتا ہے کہ یہ مخالف گروہ، زمانۂ اسلام میں بھی وجود میں نہیں آیا تھا بلکہ اس چیز کا تسلسل تھا جو مکہ میں رسول(ص) کی تحریک کے دوران وجود میں آیا تھا پھر جب عہد عثمان میں (جو کہ بنی امیہ سے تھے) خلافت بنی امیہ کے ہاتھ میں آئی تو ابوسفیان نے (جو کہ اس وقت اندھا ہوچکا تھا) اپنے پاس بیٹھے ہوئے دوستوں سے معلوم کیا کہ میٹنگ میں کون کون ہے؟ بتایا گیا کہ فلاں، فلاں، فلاں ہے، جب اسے یہ اطمینان ہوگیا کہ سب اپنے ہی ہیں اور جلسہ میں کوئی بیگانہ نہیں ہے تو اس نے ان لوگوں سے کہا:’’تَلَقَّفُوھَا تَلَقُّفَ الْکُرَۃِ‘‘۔(احتجاج طبرسی، ج۱ص۲۲۴)۔    یعنی حکومت کو گیند کی مانند آپس ہی میں گھماتے رہو، خبردار! اسے ہاتھ سے نہ جانے دینا۔ اس کو شیعہ سنی دونوں تاریخوں نے لکھا ہے، یہ اعتقادی مسائل نہیں ہیں اور ہم بھی  اعتقادی لحاظ سے بحث نہیں کرتے ہیں؛ یعنی مجھے یہ بات پسند نہیں ہے کہ (اپنے عقائد کے مطابق) مسائل کی تحلیل و تجزیہ کروں بلکہ میں اس کا تاریخی پہلو پیش کرتا ہوں۔ البتہ ابوسفیان اس وقت (بظاہر) مسلمان تھا، اسلام لاچکا تھا، یہ بات الگ ہے کہ وہ اسلام کی غربت و کمزوری کے زمانہ میں مسلمان نہیں ہوا تھا بلکہ فتح مکہ کے بعد جب اسلام قوی ہوچکا اس وقت مسلمان ہوا تھا۔ یہ مخالف گروہ امام حسن مجتبیٰؑ کے زمانہ میں اپنی طاقت و قدرت کے اوج پر تھا۔ یہ وہی گروہ تھا جو معاویہ بن ابی سفیان کی شکل میں امام حسن(ع) مجتبیٰ کے مقابلہ میں ظاہر ہوا، اس نے جنگ شروع کی اور اسلامی حکومت کا راستہ (اسلام بہ شکل حکومت)  بند کردیا اور اس حد تک مشکلیں کھڑی کردیں کہ اسلامی حکومت کی راہ میں عملی طور پر رکاوٹ بن گیا۔





آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Tuesday - 2018 Sep 25