Wed - 2018 Dec 19
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 194218
Published : 18/6/2018 15:51

موٹاپے سے نجات کے لئے مددگار پھل ہے پپیتا

پپیتا اینٹی آکسائیڈنٹ سے بھرپور پھل ہے جو کہ جسمانی ورم کے خلاف لڑتا ہے، جسمانی ورم بھی جسمانی وزن میں کمی لانے کی کوششوں میں رکاوٹ ہے۔
ولایت پورٹل: پپیتا ایسا پھل ہے جو سارا سال دستیاب ہوتا ہے اور اس کے فوائد اکثر افراد جانتے ہیں۔
اس پھل کو مختلف پکوان پکانے کے لئے بھی تیار کیا جاتا ہے مگر کیا آپ کو معلوم ہے کہ پپیتا توند کی اضافی چربی سے نجات کے لئے بھی استعمال ہوتا ہے؟
یہ پھل غذائی اجزاء جیسے اینٹی آکسائیڈنٹس، منرلز اور وٹامنز سے بھرپور ہوتا ہے جبکہ یہ نظام ہاضمہ کو بہتر کرنے کے ساتھ جگر کی صفائی بھی کرتا ہے۔
پپیتے میں کیلوریز بہت کم ہوتی ہیں جبکہ جسم کو صحت مند بھی رکھتا ہے۔
موٹاپے سے نجات کے لئے پپیتے کے چند فوائد
فائبر سے بھرپور: فائبر سے بھرپور غذائیں نظام ہاضمہ کے لئے بہترین ہوتی ہیں اور پیٹ کو زیادہ دیر تک بھرا رکھتی ہیں، جس سے بے وقت کھانے کی عادت سے نجات میں مدد ملتی ہے۔ یہی وجہ ہے کہ موٹاپے سے نجات کے خواہشمند افراد کو فائبر سے بھرپور غذائیں کھانے کا مشورہ دیا جاتا ہے۔
ورم کے خلاف مفید: پپیتا اینٹی آکسائیڈنٹ سے بھرپور پھل ہے جو کہ جسمانی ورم کے خلاف لڑتا ہے، جسمانی ورم بھی جسمانی وزن میں کمی لانے کی کوششوں میں رکاوٹ ہے۔
ہاضمہ بہتر کرے: پپیتا نظام ہاضمہ بہتر کرنے کے ساتھ ساتھ قبض کے خلاف بھی لڑتا ہے، صحت مند معدہ اور نظام ہاضمہ جسمانی وزن میں صحت مند کمی کے لئے ضروری عناصر ہیں۔
پروٹین جذب کرنے میں مددگار: اس پھل میں پائے جانے والے اینٹی آکسائیڈنٹ گوشت کو ہضم کرنے کے ساتھ گوشت میں موجود پروٹین کو جسم میں جذب ہونے میں بھی مدد دیتے ہیں، پروٹین وہ جزء ہے جو جسمانی وزن میں مدد دیتا ہے۔
توند سے نجات کے لئے پپیتے کو کیسے کھائیں؟
بہترین نتائج یعنی توند کی اضافی چربی گھلانے کے لئے پپیتے کو ناشتے میں کھانا بہتر ہوتا ہے یا دوپہر اور رات کے کھانے کے دوران کھائیں۔ ناشتے میں اس پھل کو کھانا معیاری پروٹین اور کچھ مقدار میں صحت مند فیٹس کے حصول میں مدد دیتا ہے۔ اسی طرح کھانے کے دوران اسے کھانا پیٹ کو زیادہ دیر تک بھرا رکھتا ہے اور بے وقت ایسی اشیاء کی اشتہا ختم کرتا ہے جو موٹاپے کا باعث بنتی ہیں۔
نوٹ: یہ مضمون عام معلومات کے لئے ہے۔ قارئین اس حوالے سے اپنے معالج سے بھی ضرور مشورہ لیں۔

DAWN



آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Wed - 2018 Dec 19