Thursday - 2018 Nov 22
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 194393
Published : 3/7/2018 17:14

مارچ 2002 سے جون 2018 تک رہبر انقلاب کے فنڈ سے رہا ہونے والے قیدیوں کی امداد کا بجٹ 18 ارب 2 کروڑ 70 لاکھ تومان

موصولہ اطلاعات کے مطابق مارچ 2002 سے جون 2018 تک نادانستہ طور پر جرائیم انجام دینے والے قیدیوں کی رہائی کے لئے رہبر انقلاب نے اب تک 18 ارب 2 کروڑ 70 لاکھ تومان ادا کئے ہیں۔

ولایت پورٹل: رپورٹ کے مطابق اسلامی جمہوریہ ایران کی جیلوں میں موجود ایسے قیدی جو نادانستہ طور پر کسی جرم کے مرتکب ہوتے ہیں ان کی رہائی کے لئے کچھ خاص مواقع پر اہتمام عمل میں آتا ہے ۔ خاص طور پر ماہ رمضان المبارک اور معصومین(ع) کی ولادت کے موقع پر ایسے قیدیوں کو رہبر انقلاب کے ذاتی بجٹ سے جرمانہ ادا کر رہا کیا جاتا ہے۔
یہ جرمانہ ان قیدیوں کی رہائی کے لئے رہبر انقلاب کے ذاتی فنڈ سے ادا کیا جاتا ہے جن پر مالی جرمانہ عائد ہوتا ہے لیکن حالات کے سبب وہ ادا کرنے سے قاصر ہوتے ہیں مثلاً اگر کوئی ڈرائیور کسی مسافر کو کچل دے اور وہ وہ اس کی دیت ادا نہ کرسکے تو اسے اسلامی قانون کے تحت جیل میں ڈال دیا جاتا ہے یا کسی نے بینک سے قرض لیا ہو اور وہ اب قرض لوٹانے پر قادر نہ ہو تو بینک کے معاہدہ کے تحت اسے جیل میں ڈال دیا جاتا ہے ان میں کچھ لوگ تو وہ ہوتے ہیں جن کے گھر والے ان پر لگے جرمانے کو ادا کر اپنے لواحقین کو رہا کرا لیتے ہیں لیکن کچھ قسمت کے مارے ایسے بھی ہوتے ہیں جن کا کوئی پرسان حال نہیں ہوتا ایسے میں رہبر معظم ہر سال ماہ رمضان المبارک اور آئمہ معصومین(ع) کی ولادت کے ایام جیسا کہ 13 رجب، 3 شعبان یا 17 ربیع الاول وغیرہ کو اپنے ذاتی فنڈ سے انہیں آزاد کروانے کے لئے ان کی طرف سے صاحبان معاملہ کا قرض یا دیت ادا کرتے ہیں۔
موصولہ اطلاعات کے مطابق مارچ 2002 سے جون 2018 تک نادانستہ طور پر جرائیم انجام دینے والے قیدیوں کی رہائی کے لئے رہبر انقلاب نے اب تک 18 ارب 2 کروڑ 70 لاکھ تومان ادا کئے ہیں۔




آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Thursday - 2018 Nov 22