Wed - 2018 Nov 21
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 194602
Published : 22/7/2018 15:12

قیامت کے مراحل و منازل

اسلامی روایات سے معلوم ہوتا ہے کہ قیامت میں ایک ایسا پل ہے جس سے سب کو گذرنا ہوگا اس کا نام ’’ صراط ‘‘ ہے ، صراط وہ راستہ ہے جو جہنم کے درمیان یا اس کے اوپر سے گذرتا ہے اور جو شخص اس سے گذرجائے گا وہ جنت میں داخل ہوجائے گا اور جو جس کے قدموں میں لغزش ہو جائے گی وہ جہنم میں گر جائے گا۔ مفسرین کرام نے سورہ مریم کی ۷۱ ویں اور ۷۲ ویں آیت کو اسی صراط سے متعلق قرار دیا ہے۔

ولایت پورٹل: مردوں کے دوبارہ زندہ ہونے کے بعد جنت یا جہنم میں داخلہ سے پہلے میدان محشر میں تمام مردوں کو جمع کیا جائے گا اورچند اہم واقعات رونما ہوں گے جن کی تفصیل قرآنی آیات اور معصومین(ع) کی روایات میں موجود ہے ، ان میں سے بعض واقعات کی طرف اشارہ کیا جارہا ہے:
۱ ۔ حساب و میزان : قیامت کے اہم ترین واقعات میں ایک اہم منزل تمام لوگوں کے اعمال کا حساب و کتاب ہونا ہے جس کے مختلف طریقے ہوں گے اور اس کے بعد ہی ان کے بارے میں فیصلہ صادر ہوگا ۔ حساب وکتاب کا ایک طریقہ یہ ہوگا کہ ان کے اعمال نامے خود لوگوں کے ہاتھ میں دے دئے جائیں گے تا کہ و ہ خود ہی اپنے اعمال سے واقف ہوسکیں ۔(۱)اس کے علاوہ فرشتے اور انبیاء ان کے اعمال کی گواہی دیں گے۔(۲)  
اس کے علاوہ میزان عدل نصب کی جائے گی اور اسی کے ذریعہ عدل و انصاف کے اعمال کا وزن کیا جائے گا۔(۳)
قیامت کے دوسرے گواہ، خود انسانی اعضاء و جوارح ہوں گے۔ (۴)  
اس کے علاوہ روز قیامت’’تجسم اعمال‘‘( اعمال کا مجسم ہو کر ظاہر ہونا) حساب و کتاب اور اعمال کے فیصلہ کا سب سے دقیق طریقہ ہوگا۔(۵)
۲۔ صراط: اسلامی روایات سے معلوم ہوتا ہے کہ قیامت میں ایک ایسا پل ہے جس سے سب کو گذرنا ہوگا اس کا نام ’’ صراط ‘‘ ہے ، صراط وہ راستہ ہے جو جہنم کے درمیان یا اس کے اوپر سے گذرتا ہے اور جو شخص اس سے گذرجائے گا وہ جنت میں داخل ہوجائے گا اور جو جس کے قدموں میں لغزش ہو جائے گی وہ جہنم میں گر جائے گا۔ مفسرین کرام نے سورہ مریم کی ۷۱ ویں اور ۷۲ ویں آیت کو اسی صراط سے متعلق قرار دیا ہے۔(۶)
۳ ۔ اعراف: جنت اور جہنم کے درمیان ایک جگہ ہے جس کا نام اعراف ہے ، اس کے اوپر کچھ بلند مرتبہ افراد ہوں گے جوتمام جنتی اور جہنمی لوگوں کو پہچانتے ہوں گے شاید یہ حضرا ت میدان قیامت کے قاضی ہوں گے یہ حضرات انبیائے کرام یا ان کے اولیاء و اوصیاء ہوں گے۔
۴۔ لواء الحمد: جب حساب و کتاب کا مرحلہ ختم ہوجائے گا اور اہل جنت و جہنم کافیصلہ آشکار ہوجائے گا تو پروردگار عالم پیغمبر اکرم(ص) کے ہاتھ میں ایک علم( پرچم ) دے گا جو ’’ لواء الحمد ‘‘ کے نام سے مشہور ہے اور آپوہ پرچم لے کر اہل بہشت کے آگے آگے جنت کی طرف روانہ ہوں گے۔
۵ ۔حوض کوثر : روایات میں اس بات کا تذکرہ بھی ہے کہ میدان محشر میں ایک بہت بڑے حوض ہوگا جو’’ حوض کوثر‘‘ کے نام سے مشہور ہے سب سے پہلے پیغمبر اکرم(ص) اس کے پاس تشریف فرما ہوں گے  امت مسلمہ کے نجات یافتہ افراد پیغمبر اکرم(ص) امیر المومنین(ص) اور اہل بیت(ع) کے ہاتھوں اس سے سیراب ہوں گے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
حوالہ جات:
۱۔اسراء:۱۳ ۔ ۱۴ ۔        
۲۔نحل: ۸۹،نساء:۴۱،ق:۱۸۔
۳۔انبیاء: ۴۷
۴۔نور :۲۴،فصلت:۲۰، ۲۱۔
۵۔ توبہ: ۳۴ ۔ ۳۵
۶۔{وَإِنْ مِنْکُمْ إِلاَّ وَارِدُہَا کَانَ عَلَی رَبِّکَ حَتْماًا مَقْضِیًّا ثُمَّ نُنَجِّی الَّذِینَ اتَّقَوْا وَنَذَرُ الظَّالِمِینَ فِیہَا جِثِیًّا}’’ اور تم میں سے کوئی ایسا نہیں ہے جسے جہنم کے کنارے حاضر نہ ہونا ہو کہ یہ تمہارے رب کا حتمی فیصلہ ہے اس کے بعد ہم متقی افراد کو نجات دے دیں گے اور ظالمین کو جہنم میں چھوڑدیں گے‘‘۔(مریم: ۷۱۔۷۲)



آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Wed - 2018 Nov 21