Sunday - 2018 Dec 16
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 195110
Published : 25/8/2018 15:15

بچوں کو نیکی سکھانے کا بالکل آسان طریقہ

نیکی کرنے کا مطلب صرف یہ ہی نہیں ہے کہ آپ اپنے گھر میں رکھی ہوئی اپنی سب سے محبوب چیز کسی کو قربۃ الی اللہ اٹھا کر دیدیں۔ یہ تو امداد کا ایک اعلٰی مرتبہ و طریقہ ہے ۔ بلکہ آپ بہت سے چھوٹے چھوٹے کام کرکے بھی انسانیت کی خدمت کرسکتے ہیں مثال کے طور پر جب آپ اپنے بچوں کے ہمراہ گھر سے باہر کہیں جارہے ہوں اور آپ کے سامنے راستے میں کوئی پتھر یا کنکر وغیرہ آجائے تو آپ جھک کر اسے راستے سے ہٹائیے اور اگر آپ کا بچہ آپ سے دریافت کرے کہ آپ نے ایسا کیوں کیا؟تو آپ اسے سمجھائیے کہ ہم نے یہ پتھر اس وجہ سے ہٹایا ہے تاکہ کوئی ٹھوکر کھاکر نہ گر جائے۔

ولایت پورٹل: قارئین کرام! آج کی مصروفیت کے اس دور میں گویا ہماری بہت سی اچھی عادتیں چھوٹ سی گئیں ہیں ایک زمانہ وہ تھا کہ جب لوگ نیکی کرنے کا کوئی بہانا اپنے ہاتھ سے جانے نہیں دیتے تھے۔لہذا اگر ہم خود نیکی کرنا چھوڑ دیں تو ہمارے بچے کہاں سے کسی کے ساتھ بھلائی کرنا سکھیں گے۔
نیکی کرنے کا مطلب صرف یہ ہی نہیں ہے کہ آپ اپنے گھر میں رکھی ہوئی اپنی سب سے محبوب چیز کسی کو قربۃ الی اللہ اٹھا کر دیدیں۔ یہ تو امداد کا ایک اعلٰی مرتبہ و طریقہ ہے ۔ بلکہ آپ بہت سے چھوٹے چھوٹے کام کرکے بھی انسانیت کی خدمت کرسکتے ہیں مثال کے طور پر جب آپ اپنے بچوں کے ہمراہ گھر سے باہر کہیں جارہے ہوں اور آپ کے سامنے راستے میں کوئی پتھر یا کنکر وغیرہ آجائے تو آپ جھک کر اسے راستے سے ہٹائیے اور اگر آپ کا بچہ آپ سے دریافت کرے کہ آپ نے ایسا کیوں کیا؟تو آپ اسے سمجھائیے کہ ہم نے یہ پتھر اس وجہ سے ہٹایا ہے تاکہ کوئی ٹھوکر کھاکر نہ گر جائے۔
نیز اسے یہ بھی ذہن نشین کروائیے کہ راستہ چلنے والا شاید کبھی یہ بات نہ سمجھ پائے کہ کسی نے اس کے راستے کا روڑا ہٹایا ہے تاکہ وہ اس کا شکریہ ادا کرسکے لیکن ہر کام کو صرف اس وجہ سے نہیں کرنا چاہیئے کہ کوئی پلٹ کا آپ کا شکریہ ادا کرے۔
لہذا آپ بغیر توقع کے مہربانی کرنے کو خود بھی انجام دیجئے اور بچوں کو بھی یاد کروائیے چونکہ کچھ دن یا سال کے بعد۔خدا نہ کرے۔کوئی ایسا موقع آسکتا ہے کہ آپ یہ توقع کریں کہ اے کاش کوئی آپ کے لئے فلاں کار خیر کردیتا۔
کبھی کبھی اپنے غریب و نادار رشتہ داروں کی اس انداز میں مدد کیجئے کہ انہیں پتہ بھی نہ چلے مثلاً ان کے تکیہ کے نیچے کچھ پیسہ رکھ دیجئے اور اپنے بچوں کو بھی یاد کروائیے تاکہ انہیں پتہ چل سکے کہ اس طرح بھی کسی کی مدد کی جاسکتی ہے ۔چونکہ وہ خدا ہے جس نے کہا ہے کہ صرف میرے لئے کسی کی مدد کرو! اور یہی قربۃً الی اللہ کا اصل مصداق ہے۔
یہ کتنی چھوٹی چھوٹی اور آسان چیزیں ہیں لیکن ان کے نتائج کتنے بہتر ہیں اس کا اندازہ وہی لگا سکتا ہے جس نے کبھی ایسا کیا ہو اگرچہ فیس بُک،انسٹاگرام اور دیگر سوشل نیٹورکس پر لوگوں کو لائیک کرنا تو ہم نے خوب سیکھ لیا لیکن اپنوں سے ایسی محبت کہ جس میں کسی چیز کی توقع نہ ہو ہم بلکل بھول گئے ہیں۔



آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Sunday - 2018 Dec 16