Saturday - 2018 Dec 15
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 195112
Published : 25/8/2018 16:41

کن لوگوں کی نماز باطل اور اعمال بے فائدہ ہیں؟

آیت سے معلوم ہوا کہ منافقین، حقیقت میں کافر ہیں چونکہ وہ لوگ ظاہر میں اور سب کے سامنے تو اللہ کی وحدانیت کا اقرار کرتے ہیں اور رسول(ص) کی رسالت کی گواہی دیتے ہیں لیکن نماز میں سستی برتتے ہیں انفاق کو بوجھ سمجھتے ہیں۔لہذا نہ انہیں نماز کا کوئی ثواب ملے گا اور نہ انفاق کا ان کی زندگی میں کوئی تاثیر ہوگی۔

ولایت پورٹل: اللہ تعالٰی قرآن مجید کے سورہ توبہ میں ان لوگوں کے بارے بیان کرتا ہے کہ جو نماز بھی پڑھتے ہیں ،راہ خدا میں انفاق و صدقہ بھی دیتے ہیں لیکن ان کے یہ اعمال بے اثر ہیں انہیں ان کا کوئی فائدہ نہیں ہوگا۔
نماز کو سُستی و کاہلی سے پڑھنا حقیقی مؤمن کی شان نہیں ہے چونکہ نماز عبد و معبود کے درمیان رابطہ کی سب سے واضح و جلی علامت ہے لہذا اس میں سستی کرنا قبولیت کی راہ میں مانع ہوسکتی ہے۔
اللہ تعالٰی سورہ توبہ کی 53 اور 54 آیات میں منافقین کی طرف سے کئے جانے والے انفاق کے بارے میں خبر دے رہا ہے کہ جو نماز کو بے دلی سے پڑھتے ہیں اور اس کی راہ میں انفاق بھی بڑی کراہت اور بوجھ سمجھ کر کرتے ہیں۔
یہ آیت منافقین کی دیگر علامتوں اور ان کے نتیجہ کار اور انجام کی طرف اشارہ کرکے ثابت کرتی ہے کہ کس طرح ان کے اعمال بے روح اور بغیر اثر کے ہوتے ہیں کہ جن کا کوئی فائدہ ان کی طرف لوٹ کر نہیں آتا جبکہ عمال کے درمیان نماز اور اللہ کی راہ میں انفاق کا ایک خاص مقام ہوتا ہے۔
در حقیقت اس آئیہ کریمہ میں 3 چیزیں نماز اور انفاق کی قبولیت میں مانع ہیں:
1۔’’ إِلّا أَنَّهُم کَفَرُوا بِاللّه ِ وَ بِرَسُولِه ِ‘‘۔کفر باللہ شرک ہے اور انکار توحید ہے اور انکار رسالت ہے۔
2۔’’ وَ لا یَأتُون َ الصَّلاةَ إِلّا وَ هُم کُسالی ‘‘۔انہیں نماز کی کارائی پر کوئی عقیدہ نہیں ہوتا وہ تو بس اپنے کو مسلمان ظاہر کرنے کے لئے نماز پڑھتے ہیں ۔
3۔’’ وَ لا یُنفِقُون َ إِلّا وَ هُم کارِهُون َ ‘‘۔ان کا انفاق کرنا بھی قربۃً الٰی اللہ نہیں ہوتا بلکہ صرف اس وجہ سے کہیں دو پیسہ خرچ کرتے ہیں تاکہ یہ کہہ سکیں کہ ہم نے بھی دین کی خدمت کی ہے۔
پس آیت سے معلوم ہوا کہ منافقین، حقیقت میں کافر ہیں چونکہ وہ لوگ ظاہر میں اور سب کے سامنے تو اللہ کی وحدانیت کا اقرار کرتے ہیں اور رسول(ص) کی رسالت کی گواہی دیتے ہیں لیکن نماز میں سستی برتتے ہیں انفاق کو بوجھ سمجھتے ہیں۔لہذا نہ انہیں نماز کا کوئی ثواب ملے گا اور نہ انفاق کا ان کی زندگی میں کوئی تاثیر ہوگی۔

 


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Saturday - 2018 Dec 15