Thursday - 2018 Dec 13
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 195113
Published : 25/8/2018 17:44

تمام ادیان پر اسلام کا غلبہ

جیسے جیسے زمانہ آگے کی طرف بڑھ رہا ہے ، علم کی پیشرفت اور روابط کی آسانی کے ساتھ ساتھ فضول پروپگنڈوں کا پردہ ہٹتا جائے گا اور حقائق کا چہرہ آشکار ہوتا چلا جائے گا اور مخالفین حق جو اسکی راہ میں رکاوٹیں کھڑی کرتے ہیں وہ سب ختم ہو جائیں گی، یوں دین حق تمام جگہوں پر محیط ہو جائیگا چاہے حق کے دشمن نہ چاہیں؛ کیوں کہ جب رسول اسلام(ص) کی دعوت کا مضمون اور متن ہدایت پر مبنی ہے اور عقل ہر مقام پر اسکی گواہی دیگی نیز جب اصول و فروع حق کے موافق ہیں تو ایسا دین فطرتاً تمام ادیان پر کامیابی حاصل کرے گا۔

ولایت پورٹل: قارئین کرام! قرآن مجید کی کئی آیات میں حق کے غلبہ اور تمام ادیان پر اسلام کی فتح کا اعلان ہوا ہے انہیں آیات میں سے یہ آئیہ کریمہ ہے:’’ ھُوَ الَّذِی اٴَرْسَلَ رَسُولَہُ بِالْھُدیٰ وَدِینِ الْحَقِّ لِیُظْھِرَہُ عَلَی الدِّینِ کُلِّہِ وَلَوْ کَرِہَ الْمُشْرِکُونَ‘‘۔(سورہ توبہ:33)
ترجمہ:وہ خدا وہ ہے جس نے اپنے رسول کو ہدایت اور دین حق کے ساتھ بھیجا تاکہ اپنے دین کو تمام ادیان پر غالب بنائے چاہے مشرکین کو کتنا ہی ناگوار کیوں نہ گذرے۔
غلبہ دو طرح سے متصوَر ہے :
1۔ حق و حقیقت و منطقیت و حقانیت کا غلبہ
2۔ طاقت و حکومت کا عینی اور ظاہری غلبہ
غلبہ حق :
غلبہ حق بھی دو طرح سے قابل تصور ہے:
1۔ حق کا ذاتی غلبہ چاہے کوئی مانے یا نہ مانے
2۔ لوگوں میں حق کا غلبہ ، یعنی یہ کہ لوگوں کی اکثریت حق کو مان لے۔
حق کا ذاتی غلبہ :
حق کا ذاتی غلبہ تو واضح ہے ، حق ہمیشہ غالب ہے اور کبھی بھی حق مغلوب نہیں ہو سکتا، اور یہ غلبہ ذاتی ہے اور ضرورت عقلی کی بنا پر ہے اور اس لحاظ سے کسی کے ماننے یا نہ ماننے کا محتاج بھی نہیں ہے ، جیسا کہ ارشاد نبی صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم ہے:’’يعلو و لايعلي عليه‘‘۔یعنی حق ہمیشہ غالب ہے اور اس پر غالب نہیں ہوا جا سکتا۔(ابي جعفر رشيد الدين محمد بن علي بن شهر آشوب، مناقب آل ابي طالب(ع)، بيروت، انتشارات دارالاضواء، 1412ق، ج3، ص279،نوري طبرسي، حسن، مستدرك الوسائل، قم، انتشارات آل البيت(ع)، احياء التراث، 1407ق، ج17، ص142)
اس لحاظ سے اسلام دیگر ادیان پر غالب ہو چکا ہے کیونکہ حق و حقانیت و منطق و استدلال کے نقطہ نظر سے موجودہ ادیان کا اسلام سے کوئی موازنہ و مقابلہ نہیں ہے۔
آیت :’’ھُوَ الَّذِی اٴَرْسَلَ رَسُولَہُ بِالْھُدیٰ وَدِینِ الْحَقِّ‘‘ میں ہدایت سے مراد روشن دلائل اور واضح براہین ہیں جو کہ دین اسلام میں موجود ہیں اور دین حق سے مراد یہی دین ہے جس کے اصول و فروع حق ہیں مختصر یہ کہ اسکی تاریخ، اسکا حاصل سب حق ہے اور بلا شبہ اسکی تاریخ سب روشن ہے تو تمام ادیان پر اسلام  غالب اور کامیاب ہے، چاہے اسے کوئی مانے یا نہ مانے۔
لوگوں میں حق کا غلبہ :
رہ گئی بات یہ کہ لوگوں میں حق کا غلبہ کیسے ہوگا ، لوگ کیسے حق کو مانیں  گے ، تو یہ ہم دیکھ رہے ہیں جیسے جیسے زمانہ آگے کی طرف بڑھ رہا ہے ، علم کی پیشرفت اور روابط کی آسانی کے ساتھ ساتھ فضول پروپگنڈوں کا پردہ ہٹتا جائے گا اور حقائق کا چہرہ آشکار ہوتا چلا جائے گا اور مخالفین حق جو اسکی راہ میں رکاوٹیں کھڑی کرتے ہیں وہ سب ختم ہو جائیں گی، یوں دین حق تمام جگہوں پر محیط ہو جائیگا چاہے حق کے دشمن نہ چاہیں؛ کیوں کہ جب رسول اسلام(ص) کی دعوت کا مضمون اور متن ہدایت پر مبنی ہے اور عقل ہر مقام پر اسکی گواہی دیگی نیز جب اصول و فروع حق کے موافق ہیں تو ایسا دین فطرتاً تمام ادیان پر کامیابی حاصل کرے گا۔
دشمن جتنا دبانا چاہے گا اسلام اتنی ہی شدت سے ابھر کے آشکار ہوگا ۔ آج مغربی ممالک میں خاص کر امریکا میں اسلام قبول کرنے والوں کی بڑھتی شرح اس بات کی گواہ ہے ۔ ایک موثق رپورٹ کے مطابق جب سے امریکی حکومت نے اسلام دشمنی میں شدت اختیار کی ہے، پوری دنیا میں اسلام قبول کرنے والوں کی شرح میں بھی اضافہ ہوا ہے، صرف امریکا میں سالانہ سوا لاکھ سے زیادہ افراد مشرف بہ اسلام ہو رہے ہیں، اور وہ افراد زیادہ تر پڑھے لکھے دانشور طبقہ سے تعلق رکھتے ہیں۔ مزید معلومات کے لئے دیکھئے:(http://www.newenglishreview.org/Ibn_Warraq/Population_and_the_True_Number_of_Converts_to_Islam/)
حکومت حق کا عینی غلبہ :
مزکورہ آیت میں " لِیُظْھِرَہُ عَلَی الدِّینِ " جو لفظ اظہار کا مادہ ہے قرآن میں دوسرے مقامات پر بھی استعمال ہوا ہے اور زیادہ تر جسمانی غلبہ اور ظاہری قدرت کے لئے آیا ہے جیسا کہ سورہ کہف کی آیت 20 میں آیا ہے اور سورہ توبہ کی آیت 8 میں آیا ہے۔ ان آیات پر غور کرنے سے سمجھ میں آتا ہے ایسے مواقع پر زیادہ تر مراد عملی اور عینی ہوتا ہے۔
بہرحال زیادہ مناسب ہے کہ کہ مذکورہ غلبہ اور کامیابی کو ہر قسم کا غلبہ سمجھا جائے کیوں کہ یہ معنی قرآن سے بھی زیادہ مطابقت رکھتا ہے اور وہاں مطلق طور پر غلبہ کا ذکر ہے یعنی ایک دن ایسا آئیگا جب اسلام منطقی لحاظ سے بھی اور ظاہری قوت و طاقت کے لحاظ سے بھی تمام ادیان عالم پر کامیابی حاصل کرے گا۔ جب امام منتظر مہدی(عج) بر حق کا ظہور پر نور ہوگا ، اور پرچم اسلام امام معصوم کے ہاتھوں پوری دنیا میں لہرائے گا ۔ تب اسلام کا ظاہری اور عینی غلبہ بھی محقق ہو جائے گا ۔ إِذَا جَاءَ نَصْرُ اللَّهِ وَالْفَتْحُ  وَرَأَیْتَ النَّاسَ یَدْخُلُونَ فِی دِینِ اللَّهِ أَفْوَاجًا۔




آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Thursday - 2018 Dec 13