Saturday - 2018 Dec 15
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 195124
Published : 26/8/2018 7:18

2018ء میں 31 نامہ نگار ٹرمپ کےلفظی حملوں کا شکار

رواں سال میں اب تک کئی بار امریکی میڈیا ٹرمپ کے حملوں کا شکار ہوچکا ہے لیکن حالیہ حملے ناقابل برداشت ہیں۔

ولایت پورٹل:الجزیرہ ٹی وی چینل نے امریکہ میں میڈیا کی آزادی کے بارے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ رواں سال میں  اب تک کئی بار اس ملک کا میڈیا ٹرمپ کے حملوں کا شکار ہوچکا ہے لیکن حالیہ حملے ناقابل برداشت ہیں ،الجزیرہ نے اپنے پروگرام ’’واشنگٹن سے‘‘ کو ٹرمپ کے میڈیا پر حملوں سے مخصوص  کرتے ہوئے کہا  کہ امریکہ 350  اخبار اور جرائد جو  اپنے اداریہ آزادی بیان کے حق میں لکھتے ہیں وہ جب امریکی صدر ٹرمپ کو تنقید کا نشانہ بناتے ہیں تو ٹرمپ ان کے جواب میں ٹوئٹ کرتے ہیں  کہ یہ جعلی میڈیا دشمن کا آلۂ کار  اور ملک کے لیے خطرہ ہے،ادھر بوسٹن کلب نے لکھا ہے کہ میڈیا کی آزادی کا مطلب یہ ہے ذرائع آزادنہ طور پر حقیقت کو حکومت کے سامنے پیش کریں ، اگر چہ ان سے بھی غلطی ہوسکتی  ہے لیکن اس کا یہ مطلب نہیں جو بھی ذرائع ابلاغ ٹرمپ پر تنقید کردے وہ جعلی ہوجاتا ہے، امریکی صدر سوچتے ہیں کہ ایسا کرنے سے ان کے چاہنے والوں میں ہیجان بڑھے گا لیکن حقیقت میں یہ ڈیموکریسی کے لیے بہت بڑا خطرہ ہے۔



آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Saturday - 2018 Dec 15