Friday - 2019 January 18
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 195556
Published : 2/10/2018 16:44

ظلم سہنا بھی مثل ظلم کرنا گناہ عظیم ہے:شہید بہشتی

انسان،کسی بھی صورت کسی ظلم کے تلے نہ رہے،ظلم اقتصادی،ظلم اجتماعی،اخلاقی ظلم کے سائے میں نہ رہے چونکہ یہ سب اسے فساد،کفر،محرومیت اور تباہی تک لے جائیں گے۔جس طرح دوسروں پر ظلم کرنا گناہ ہے ویسے ہی ظلم سہنا اور برداشت کرنا بھی گناہ ہے۔

ولایت پورٹل: دوسروں پر ظلم کرنے والے در حقیقت بہت بڑے گنہگار ہیں لیکن ظلم سہنے والے کیا ہیں؟
اسلام کے نقطہ نظر سے ظلم و ستم سہنا اتنا ہی بڑا گناہ ہے جتنا کسی دوسرے پر ظلم کرنا۔
اے انسان تو آزاد ہے،تو طبقاتی ظلم، اجتماعی ظلم ،انفرادی ظلم کے مد مقابل ڈٹ جا۔
تو آزاد ہے۔اگر تو ظلم سہنے کا عادی بن چکا ہے تو خود کو ملامت کر،
اقَالَ لِكُلٍّ ضِعْفٌ وَلَـٰكِن لَّا تَعْلَمُونَ۔(اعراف:۳۸)
ترجمہ:ارشاد ہوگا ہر ایک کے لئے دونا عذاب ہے لیکن تم جانتے نہیں ہو۔
وہ پہلے والا گروہ اس گروہ سے کہے گا کہ: کیا تم لوگوں نے ابھی نہیں دیکھا کہ ہم دونوں کا (عذاب سے)حصہ ایک جیسا ہے۔ لہذا اب تم لوگ بھی ہمارے ساتھ عذاب الہی کا مزہ چکھو۔یہ وہ سزا ہے جسے تم لوگوں نے خود اپنے ہاتھ سے تیار کیا ہے۔
آپ ملاحظہ کیجئے! ان آیات میں اور ان سے مشابہ دیگر آیات  میں قرآن مجید اس بات پر بہت تاکید کرتا ہے کہ کوئی بھی انسان،کوئی بھی شخص۔یہ قرآن مجید کا بیان ہے۔کوئی بھی انسان،کسی بھی صورت کسی ظلم کے تلے نہ رہے،ظلم اقتصادی،ظلم اجتماعی،اخلاقی ظلم کے سائے میں نہ رہے چونکہ یہ سب اسے فساد،کفر،محرومیت اور تباہی تک لے جائیں گے۔
پس قرآن کا بیان یہ ہے: اے انسان تو آزاد ہے اجتماعی اعتبار سے،اور ہر طرح کے اجتماعی جبر و تشدد کی حاکمیت سے،لیکن کیا ہر ماحول اور ہر جگہ انسان کے لئے مناسب ہے؟ نہیں! بلکہ بہت سے ماحول اور فضا ایسے ہوتے ہیں جہاں انسان نیکی،خیرخواہی اور خدا کی طرف آسانی سے بڑھتا چلا جاتا ہے۔اور کچھ ماحول اور میدان ایسے ہوتے ہیں جو انسان کے لئے شیطان پرستی،ہوا پرستی، خود پرستی اور تباہکاری کے راستے ہموارے کردیتے ہیں ۔
یہی وہ مقام ہے کہ جہاں دین اسلام انسان کو ٹوک دیتا ہے کہ اب آگے مت بڑھو! بلکہ پہلے اپنے اجتماعی نظریہ کی اصلاح کرو ۔اور معاشرے میں اصلاح و فساد کی نسبت غیر جانبدارانہ رویہ کو چھوڑ دو ۔بس یہی وہ مقام ہے کہ جہاں سے اسلام لبرلیزم سے الگ ہوجاتا ہے۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Friday - 2019 January 18