سه شنبه - 2019 مارس 19
ہندستان میں نمائندہ ولی فقیہ کا دفتر
Languages
Delicious facebook RSS ارسال به دوستان نسخه چاپی  ذخیره خروجی XML خروجی متنی خروجی PDF
کد خبر : 72066
تاریخ انتشار : 1/4/2015 19:47
تعداد بازدید : 18

سعودی جارحیت: غیر ملکی شہریوں کی حالت تشویشناک

یمن پر سعودی عرب کی جارحیت کی بنا پر ہزاروں غیر ملکی شہری یمن سے اپنے اپنے ملکوں کو واپس جانے میں بہت زیادہ مسائل کا سامنا ہے اور صورت حال تشویناک ہوگئی ہے-
ارنا کی رپورٹ کے مطابق یمن میں اس وقت ہندوستان، پاکستان، ملائیشیا، انڈونیشیا اور فلپائن سمیت جنوب مشرقی ایشیا کے مختلف ملکوں کے ہزاروں باشندے پھنسے ہوئے ہیں اور وہ فضائی راستے سے اپنے اپنے ممالک جانے سے قاصر ہیں- اس رپورٹ کے مطابق ملائیشیا کے وزیر خارجہ عنیفہ امان نے بدھ کو ایک بیان میں کہا ہے کہ یمن سے ملائیشیائی شہریوں کو نکالنے کا امکان نہیں ہے اسی وجہ سے انہیں زمینی راستوں سے نکالنے کی کوشش کی جارہی ہے- یمن میں، چھے سو ملائیشین باشندے موجود ہیں جن میں دو سو چونسٹھ نے وطن واپسی کی خواہش ظاہر کی ہے- ادھر فلپائن کی وزارت خارجہ نے کہا ہےکہ یمن کےلئے تمام پروازیں منسوخ کردی گئی ہیں اور یمن سے فلپائنی شہریوں کو نکالنا بہت مشکل ہوچکا ہے- یمن میں تقریبا دو ہزار فلپائنی شہری موجود ہیں- یمن میں انڈونیشیا کے سفارتخانے نے یمن سے اپنے شہریوں کو وطن واپس بھیجنے پر آمادگی کا اعلان کیا ہے لیکن سعودی جارحیت کی وجہ سے فضائی راستوں سے شہریوں کو وطن بھیجنے کا عمل نہایت خطرناک بنا ہوا ہے- انڈونیشیائی میڈیا کے مطابق یمن پر آل سعود کی جارحیت سے تقریبا دوہزار انڈونیشی باشندوں کی جانوں کو خطرہ لاحق ہے۔ اطلاعات کے مطابق پاکستان نے بھی یمن سے اپنے سیکڑوں شہریوں کو طیاروں کےذریعے وطن واپس بھیج دیا ہے- ایک خبر یہ بھی ہے کہ ہندوستان نے یمن میں اپنی بحریہ کے جہاز عدن بندرگاہ میں لنگر انداز کر دیئے ہیں-


نظر شما



نمایش غیر عمومی
تصویر امنیتی :