Wed - 2019 January 16
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 72113
Published : 3/4/2015 18:44

نماز جمعہ تہران، ایرانی مذاکراتی ٹیم کی تعریف

تہران کی نماز جمعہ آیت اللہ امامی کاشانی کی امامت میں ادا کی گئی- آیت اللہ امامی کاشانی نے نماز جمعہ کے خطبوں میں سوئٹزرلینڈ کے شہر لوزان میں پانچ جمع ایک گروپ کے ساتھ ایران کے ایٹمی مذاکرات میں مشترکہ بیان تک پہنچنے کے لیے ایرانی وفد کی کوششوں کی تعریف کی ہے-
انھوں نے کہا کہ ایٹمی مذاکرات کے مشترکہ بیان نے ظاہر کر دیا کہ مغربی دنیا نے پرامن ایٹمی توانائی کے حامل ایران کی حقیقت کو تسلیم کر لیا ہے جبکہ اس سے قبل وہ اس حققیت کو قبول نہیں کرتا تھی- آیت اللہ امامی کاشانی نے کہا کہ ایران کی مذاکرات ٹیم نے پرامن ایٹمی پروگرام رکھنے کے ملت ایران کے حق کا مغرب کے سامنے بخوبی دفاع کیا ہے- ان کا کہناتھا کہ ایران کا حق بین الاقوامی معاہدوں کی بنیاد پر مغرب کی جانب سے تسلیم کر لیا گیا ہے البتہ اس کی جزئیات اور تفصیلات کے بارے میں آئندہ تین ماہ کے دوران بحث ہو گی- آیت اللہ امامی کاشانی نے ایران پر عائد پابندیوں کے خاتمے کے بارے میں بھی کہا کہ مغربی مذاکرات کاروں نے یہ قبول کر لیا ہے کہ ایران پر عائد پابندیوں کو ملتوی نہیں بلکہ ختم ہونا چاہیے جو لوزان میں ہونے والے ایٹمی مذاکرات میں ایک بڑی کامیابی ہے- انھوں نے اسی طرح ایٹمی مذاکرات کے بارے میں امریکی صدر کے بیان کے بارے میں کہا کہ باراک اوباما نے دنیا والوں کے سامنے اعتراف کیا ہے کہ وہ ایران کو اپنے پرامن ایٹمی پروگرام سے پسپائی اختیار کرنے پر قائل نہیں کر سکے البتہ انھوں نے ایٹمی ہتھیاروں کے بارے میں جھوٹ بولا ہے جبکہ ایران نے نہ تو کبھی ایٹمی ہتھیار بنانے کی کوشش کی ہے اور نہ کر رہا ہے- آیت اللہ امامی کاشانی نے نماز جمعہ کے خطبوں میں ایٹمی مذاکرات میں ایران کی کامیابی کے اسباب و عوامل کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ ایران کی مذاکراتی ٹیم کی کامیابی کی وجہ ایران کی سائنسی ترقی اور عالمی درجہ بندی میں ایران کی علمی و سائنسی پوزیشن میں اضافہ ہے- انھوں نے مزید کہا کہ علمی و سائنسی ترقی ایران کو استقامتی معیشت سمیت ترقی و پیشرفت کی جانب لے گئی ہے کہ جس پر رہبر انقلاب اسلامی نے زور دیا ہے- ایران اور گروپ پانچ جمع ایک نے جمعرات اور جمعہ کی درمیانی شب لوزان میں ایٹمی مذاکرات کے بعد ایک مشترکہ بیان میں ایران کی پرامن ایٹمی سرگرمیوں کے بارے میں حتمی معاہدے کے فریم ورک کو واضح کیا ہے- ایران کے وزیر خارجہ محمد جواد ظریف کے بقول لوزان میں جاری ہونے والے مشترکہ بیان کے مطابق ایران اور گروپ پانچ جمع ایک کے ایٹمی مذاکرات کے حتمی معاہدے کا متن جون کے آخر تک تیار کیا جائے گا-


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Wed - 2019 January 16