Monday - 2018 August 20
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 72122
Published : 3/4/2015 19:29

ایٹمی مذاکرات کا اہم ترین ثمرہ ایران کے ایٹمی پروگرام کا تسلیم کیا جانا ہے

اسلامی جمہوریہ ایران کے نائب وزیر خارجہ نے کہا ہےکہ لوزان میں ایران اور پانچ جمع ایک گروپ کے مشترکہ بیان میں ایران کے ایٹمی پروگرام کو باضابطہ طور پر تسلیم کیا گیا ہے- ایران کے نائـب وزیر خارجہ اور مذاکرتی ٹیم کے سینئر رکن سید عباس عراقچی نے کہا ہے کہ ایران اور پانچ جمع ایک کا لوزان بیان، تقریبا سولہ مہینوں کے مسلسل مذاکرات کا نتیجہ ہے- انہوں نے کہا کہ یہ بیان اسلامی جمہوریہ ایران کے لئے ایک اہم کامیابی شمار ہوتا ہے- سید عباس عراقچی نے ایران کے ٹی وی چینل ٹو پر گفتگو میں ایران اور گروپ پانچ جمع ایک کے مشترکہ بیان کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ ایران نے مذاکرات میں فریقین کی فتح کا نظریہ برقرار رکھا جبکہ ہمارا مد مقابل بھی اپنے اھداف تک پہنچنا چاہتا تھا- انہوں نے کہا کہ ہمارے مد مقابل کا ایک مطالبہ، اعتماد کی بحالی تھا اور وہ اس بات کی ضمانت چاہتا تھا کہ ایران، اپنے ایٹمی پروگرام کو فوجی مقاصد کی طرف نہیں موڑے گا- انہوں نے کہا کہ ایران نے اس بات کی ضمانت دے کر اپنے بنیادی اور قانونی مطالبات کو منوالیا جن میں عالمی سطح پر ایران کے ایٹمی پروگرام کو تسلیم کیا جانا اہم ترین مطالبہ تھا- ایران کے نائب وزیر خارجہ سید عباس عراقچی نے کہا کہ ایران کے ایٹمی پروگرام کے خلاف اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل نے چھے قراردادیں منظور کی تھیں اور ایران کے ایٹمی پروگرام کو بے اعتبار بنادیا تھا لیکن اب یہ ساری قراردادیں کالعدم ہوجائیں گی- سید عباس عراقچی نے کہا کہ یہ ایک تاریخی نکتہ ہے اور اقوام متحدہ کی تاریخ میں اس کی کوئی مثال نہیں ملتی کہ ایک ساتھ چھے قراردادیں کالعدم قراردی جائیں گی اور اسلامی جمہوریہ ایران کے ایٹمی پروگرام کو تسلیم کرلیا جائے گا- ایران کے نائب وزیر خارجہ نے کہا کہ مغربی ملکوں نے ایران پر دس برسوں سے پابندیاں لگا رکھی تھیں اور ان کا مطالبہ تھا کہ ایران، یورینیم کی افزودگی بند کرے لیکن اب صورت حال یہ ہے کہ ایران میں یورینیم کی افزودگی کا حق بھی مان لیا گیا ہے اور اسکے ایٹمی پروگرام کے جاری رہنے کی ضمانت بھی مل گئی ہے- واضح رہے کہ ایران اور پانچ جمع ایک گروپ کے ممالک نے اپنے طویل مذاکرات کے بعد لوزان میں ایک مشترکہ بیان جاری کیا ہے جس میں حتمی معاہدے کے لئے دائ‏رہ کار معین کیا گیا ہے-جوہری معاہدے کےلئے تیار کئے جانے والے فریم ورک تر اتفاق ہوجانے کا عالمی سطح پر وسیع پیمانے پر خیر مقدم کیا گیا ہے-


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Monday - 2018 August 20