Tuesday - 2018 Oct. 16
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 72299
Published : 5/4/2015 22:28

ایٹمی سمجھوتہ: دوست خوش اور دشمن نالاں، روحانی

اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر نے کہا ہے کہ سوئٹزر لینڈ کے ایٹمی مذاکرات میں ایران پر عائد پابندیوں کے ختم کئے جانے پر مذاکرات ہوئے ہیں، انہیں التواء میں ڈالے جانے کے بارے میں نہیں۔ سحر عالمی نیٹ ورک کی رپورٹ کےمطابق صدر ایران نے اتوار کو حکومتی کارگذاروں اور مختلف اداروں کے سربراہوں سے ملاقات میں ایران اور گروپ پانچ جمع ایک کے درمیان مختلف مراحل میں ہونے والے ایٹمی مذاکرات کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ایران کے عوام اور ایران کے دوست ممالک کو لوزان کے مشترکہ بیان سے خوشی ہوئی ہے جبکہ اسلامی جمہوریہ ایران کے دشمن اس سے سخت نالاں ہیں۔ ایران کی قومی سلامتی کونسل کے سربراہ نے سوئٹزرلینڈ کے حالیہ ایٹمی مذاکرات کو پیچیدہ اور دشوار قرار دیا اور کہا کہ ان مذاکرات کے مشترکہ بیان میں نطنز، فردو اور اراک کے بھاری پانی کی تنصیبات کی سرگرمیاں جاری رہنے پر اتفاق ہوا ہے لیکن حتمی سمجھوتے کی تدوین کے مرحلے میں دشواریاں درپیش ہیں ۔ ڈاکٹر روحانی نے ایران کے خلاف اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی تمام قراردادوں کو منسوخ کرنے پر تاکید کرتے ہوئے کہا کہ ایران اور گروپ پانچ جمع ایک، مذاکرات کے ذریعے سمجھوتے کے حصول میں پر عزم ہیں کیوں کہ دنیا کے پاس ایران کے ساتھ مفاہمت اور سمجھوتہ کرنے کے سوا اور کوئی راستہ نہیں ہے۔ جناب روحانی نے اس بات کا ذکر کرتے ہوئے کہ ایران کے عوام دباؤ اور پابندیوں کے سامنے تسلیم نہیں ہوں گے اس امید کا اظہار کیا کہ رہبر انقلاب اسلامی کی ہدایات اور مقننہ، عدلیہ اور انتظامیہ کے باہمی تعاون اور اتحاد و وحدت کے ذریعے ہم اچھا نتیجہ حاصل کریں گے۔ اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر نے اسی طرح علاقے پر تسلط کے لئے ایران کی کوشش پر مبنی بعض اظہار خیال کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران کبھی بھی دوسرے ملک پر جارحیت کا ارادہ نہیں رکھتا لیکن ہر جارح طاقت کا دفاع ضرور کرے گا-


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Tuesday - 2018 Oct. 16