Monday - 2018 June 25
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 72385
Published : 6/4/2015 21:36

یمن کا بحران: عوامی انقلابی تحریک مذاکرات پرآمادہ

یمن کی عوامی انقلابی تحریک انصاراللہ نے کہا ہے کہ سعودی جارحیت کے خاتمے کی صورت میں مذاکرات ہوسکتے ہیں-
یمن پریس ویب سائٹ کی رپورٹ کے مطابق یمن کی عوامی انقلابی تحریک انصاراللہ کی سیاسی کونسل کے سربراہ صالح الصماد نے کہا ہے کہ اگر سعودی عرب کی جارحیت ختم ہوجائے تو مذاکرات کئے جاسکتے ہیں- انصاراللہ کے اس سینئر رہنما نے کہا ہے کہ ان مذاکرات کے لئے یہ شرط ضروری ہے کہ مذاکرات ایسے فریقوں کی نگرانی میں ہوں جو یمنی قوم کے خلاف دشمنی اور کینہ نہ رکھتے ہوں- انہوں نے کہا کہ یمنی قوم، سابق صدر منصور ہادی کی یمن واپسی کی مخالف ہے- یمن کے سابق صدر منصور ملک چھوڑ کر سعودی عرب چلے گئے ہیں- تحریک انصاراللہ کی سیاسی کونسل کے سربراہ نے کہا کہ ہم خود مذاکرات کے موقف پرقائم ہیں اور چاہتے ہیں کہ مذاکرات جاری رہیں لیکن یہ مذاکرات، ایک دوسرے کے احترام اور برابری کی شرط نیز مد مقابل کو تسلیم کرنے کے بعد ہی انجام پاسکتے ہیں- الصماد نے ان خبروں کی تردید کی کہ عوامی انقلابی تحریک انصاراللہ، یمن کے جنوبی حصے پر قبضہ کرنا چاہتی ہے- انہوں نے کہا کہ انصاراللہ کی سرگرمیاں، القاعدہ دہشتگرد گروہ کے مقابلے پر مرکوز ہیں- انہوں نے کہا کہ یمن کے جنوبی علاقوں کے عوام، اپنے امور خود چلائیں گے اور مستقبل میں ملک کی سیاست میں اہم کردار ادا کریں گے-


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Monday - 2018 June 25