Friday - 2018 Oct. 19
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 72534
Published : 8/4/2015 13:45

چین کے خصوصی ایلچی کی ایران کے نائب وزیر خارجہ سے ملاقات

اسلامی جمہوریہ ایران کے نائـب وزیر خارجہ نے چین کے خصوصی ایلچی سے ملاقات میں کہا ہے کہ یمن کا بحران سعودی جارحیت کے خاتمے اور مذاکرات سے ہی حل ہو سکتا ہے- ارنا کی رپورٹ کے مطابق نائب وزیر خارجہ حسین امیر عبداللہیان نے چین کے خصوصی ایلچی گونگ شیاشننک سے ملاقات میں یمن میں نہتے عوام کے قتل عام کو رکوانے کے لئے سفارتی اقدامات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ یمن کا بحران سعودی عرب کی جارحیت کے فوری خاتمے اور قومی مذاکرات کے ذریعے حل ہو سکتا ہے جن میں تمام گروہ شامل ہوں- انہوں نے کہا کہ ان مذاکرات کا غیر جانبدار ملک میں ہونا ضروری ہے- امیر عبداللہیان نے خبردار کرتے ہوئے کہا کہ سعودی عرب کے یہ اقدامات جو خود اس کے علاقائی مفادات کے خلاف ہیں لیبیا اور شام کی صورتحال کے تکرار ہونے کا سبب بن سکتے ہیں لھذا علاقے کے ملکوں کو چاہیے کہ مشکوک سازشوں میں نہ آئیں- انہوں نے اسلامی جمہوریہ ایران اور چین جیسے خود مختار ملکوں کے تعاون اور صلاح و مشوروں کے جاری رہنے کی ضرورت پر تاکید کی- نائب وزیر خارجہ نے کہا کہ چین کو بحران کو پھیلنے سے روکنے کے لئے مزید فعال کردار ادا کرنا چاہیے- چین کے خصوصی ایلچی نے بھی اس ملاقات میں مشرق وسطی کے متعدد بحرانوں بالخصوص جنگ یمن کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ عالمی برادری کو علاقے کے مسائل پر توجہ کرنا چاہیے- انہوں نے کہا کہ ملکوں کے اقتدار اعلی اور قوموں کے حق خود ارادیت کا احترام ضروری ہے- چین کےخصوصی ایلچی نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے علاقائی مسائل کے بارے میں اصولی اور چین کی بنیادی پالیسیوں سے ہم آہنگ پالیسیاں اپنا رکھی ہیں- انہوں نے دونوں ملکوں کے عھدیداروں کے درمیاں ملاقاتوں اور صلاح و مشوروں کےجاری رہنے کی ضرورت پر تاکید کی-


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Friday - 2018 Oct. 19